اسلامی دنیا کی انتہائی مقدس جگہ کے دروازے یہودیوں کیلئے کھولنے کی تیاریاں مکمل، دنیا بھر کے مسلمانوں میں شدید بے چینی

اسلامی دنیا کی انتہائی مقدس جگہ کے دروازے یہودیوں کیلئے کھولنے کی تیاریاں ...
اسلامی دنیا کی انتہائی مقدس جگہ کے دروازے یہودیوں کیلئے کھولنے کی تیاریاں مکمل، دنیا بھر کے مسلمانوں میں شدید بے چینی

  

یروشلم(مانیٹرنگ ڈیسک) غاصب اسرائیل نے فلسطینیوں پر مظالم کے بعد اب ایسا اقدام اٹھانے کی کوشش شروع کر دی ہے جس سے دنیا بھر کے مسلمانوں میں بے چینی پھیل گئی ہے۔ آئی بی ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق بیشتر اسرائیلی اراکین نے مطالبہ کر دیا ہے کہ ” یہودی مسلمانوں کے انتہائی مقدس مقام ”مسجدِ اقصیٰ“ میں اپنی عبادت کریں۔“یہ مطالبہ اسرائیلی پارلیمنٹ کے سپیکر یولی ایڈیلسٹین، 3وزراءاور 3اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے سامنے آیا ہے۔ انہوں نے اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو سے مطالبہ کیا ہے کہ یہودیوں کے لیے مسجداقصیٰ کے دروازے کھولے جائیں اور اسرائیلی اراکین پارلیمنٹ کے مقدس مقام کے دورے پر عائد پابندی کا بھی خاتمہ کیا جائے۔“

رپورٹ کے مطابق اراکین اسمبلی میں حکومت پر دباﺅ بڑھانے کے لیے ”بیت المقدس لابی“ کے نام سے ایک نئی مہم شروع کر رکھی ہے جس میں وہ زیادہ سے زیادہ اراکین اسمبلی کو اپنا ہمنوا بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اس حوالے سے ایک اور مہم ”ریٹرن ٹو دی ماﺅنٹ“ کے سربراہ رافیل موریس کا کہنا ہے کہ ”جب ہم کہتے ہیں کہ ٹیمپل ماﺅنٹ (جسے مسلمان مسجداقصیٰ کہتے ہیں) صرف ہمارا ہے اور کسی دوسرے کا اس میں کوئی حصہ نہیں توہم نہ صرف ٹیمپل ماﺅنٹ پر قبضہ کر سکتے ہیں بلکہ اردن اور شام پر بھی قابض ہو سکتے ہیں اور ان تمام علاقوں پر مشتمل ایک حقیقی یہودی ریاست قائم کر سکتے ہیں۔“

مزید :

بین الاقوامی -