بھارتی ریاست کرناٹک کا وزیر تعلیم سرکاری تقریب میں اپنے سمارٹ فون پر ’’فحش فلم‘‘ دیکھتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا ،شرمناک حرکت کی ویڈیو بن گئی

بھارتی ریاست کرناٹک کا وزیر تعلیم سرکاری تقریب میں اپنے سمارٹ فون پر ’’فحش ...
بھارتی ریاست کرناٹک کا وزیر تعلیم سرکاری تقریب میں اپنے سمارٹ فون پر ’’فحش فلم‘‘ دیکھتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا ،شرمناک حرکت کی ویڈیو بن گئی

  

بنگلور و (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی ریاست کرناٹک کا وزیر تعلیم سرکاری تقریب میں موبائل فون پر فحش فلم دیکھتے ہوئے رنگے ہاتھو ں پکڑا گیا ،ریاستی وزیر اعلیٰ کی تقریر کے دوران وزیر تعلیم کی شرمناک حرکت کو وہاں موجود میڈیا کیمروں نے محفوظ کر لیا ،فحش فلم دیکھنے والا وزیر رنگے ہاتھوں پکڑنے کے باوجودشرمسار ہونے کی بجائے’’ شرماناک حرکت ‘‘ کا دفاع کرنے لگا ۔

مزید پڑھیں:سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے کے بعد بھارتی پنجاب اور ہریانہ میں پانی کی تقسیم کا معاملہ شدت اختیار کر گیا،کیپٹن امریندر سنگھ سمیت کانگریس کے تمام اراکین اسمبلی مستعفی ہو گئے

ہندوستانی نجی چینل ’’انڈیا ٹی وی ‘‘ کے مطابق بھارتی ریاست کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا کی زیر صدارت ٹیپو سلطان کے حوالے سے ایک تقریب منقعد ہوئی ،جب کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے اپنی تقریر شروع کی تو کانگریس حکومت میں پرائمری اور سیکنڈری تعلیم کے وزیر تنویر سیٹھ اپنے سمارٹ فون پر فحش ویڈیو دیکھتے ہوئے کیمرے کی آنکھوں میں’’ قید‘‘ ہوگئے ۔ یہ واقعہ ریاستی حکومت کی جانب سے بنگلور ودھان سبھا میں منعقدہ ٹیپو سلطان جینتی پروگرام میں پیش آیا۔دوسری طرف ریاستی وزیر تعلیم تنویر سیٹھ نے اس واقعہ پر اپنی صفائی پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ جب تقریب میں اپنی تقریر ختم کر کے سیٹ پر واپس آیا تو اپنے موبائل فون پر وٹس ایپ میسج دیکھ رہا تھا، یہ میسج مجھے ریاست کے مختلف اضلاع سے آتے رہتے ہیں، میں ایک رکن پارلیمنٹ کی تصویر دیکھ رہا تھا، موبائل پر کئی میسج آتے ہیں اور میں صرف انہیں’’ اوپر نیچے ‘‘ کر رہا تھا، میں نے ان میں سے کسی ویڈیو میسج کو نہ تو کھول کر دیکھا اور نہ ہی ڈاؤن لوڈ کیا تھا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ جب آپ وہ ریکارڈنگ دیکھیں گے ، تو آپ کو پتہ چل جائے گا کہ ان ویڈیوز میں کچھ بھی نہیں تھا اور انہیں پاز کیا ہوا تھا،میں صرف میسج پڑھ رہا تھا، مجھے نہیں معلوم کہ وہ تصویر اور ویڈیو مجھے کس نے بھیجے تھے۔ادھر سیاسی پارٹیوں نے تنویر سیٹھ کی فحش فلم دیکھنے کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنا نا شروع کردیا ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر اور ممبر اسمبلی سریش کمار نے اس واقعہ کو فحاشی کی حد قرار دیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -