پیپسی کوکی جانب سے نوجوان ہیروز کو سراہنے کی غرض سے تقریب کا انعقاد

پیپسی کوکی جانب سے نوجوان ہیروز کو سراہنے کی غرض سے تقریب کا انعقاد

لاہور(پ ر) پیپسی کو پاکستان کی جانب سے نوجوان ہیروز کو سراہنے کی غرض سے ’’ با مقصد ‘‘ کے عنوان سے تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب میں نوجوان نسل سے تعلق رکھنے والے چار ہیروز نے اپنے الفاظ میں اپنی کامیابی کے سفر کو حاضرین کے سامنے بیان کیا۔ تمام ہیروز کی گفتگو زندگی کوکامیاب بنانے اور دوسروں کی کامیابی کے لیے راستے پیدا کرنے کے ارد گرد رہی۔ ’’سول سسٹرز پاکستان‘‘ کی بانی اور ایڈیٹر ان چیف، کنول احمد نے بتایا کہ کیسے ذاتی آگاہی کے سفر سے ایسا پلیٹ فارم بنانے تک بات پہنچی جہاں خواتین آپس میں مسائل پر بات کر سکیں۔ امل اکیڈمی کے شریک بانی بینجے ویلیمزنے بتایا کہ کس طرح کوالیفائیڈ ٹیلنٹ کی کھوج نے انکو ایک سوشل انٹرپرائز کے قیام تک پہنچایا جہاں یونیورسٹی گریجوایٹس کی صلاحیتوں کو نکھارنے پر کام کیا جاتا ہے۔ ’’پولی اور دیگر کہانیاں‘‘ کی شریک بانی آمنے شیخ فارقی نے اپنے کاروبار کے حوالے سے تقریب کے شرکاء کو بتایا کہ کس طرح وہ پاکستان کے قابل آرٹسٹوں کے تخلیقی کاروبار کو مدد فراہم کرتے ہیں تاکہ وہ مقامی ثقافت اور کرافٹس کے حوالے سے اپنی مصنوعات لوگوں تک پہنچا سکیں۔

ٹارق کارپوریشن کے بانی عمیر جلیانوالہ نے اپنے کامیابی کے سفر پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ کم عمری میں کالنگ سننے کے عمل نے انہیں اس قابل بنایا کہ وہ ہزاروں افراد کی مظبوطی کا سبب بن سکیں۔

اس تقریب کے موقع پر بات کرتے ہوئے پیپسی کو پاکستان و افغانستان کے جنرل مینجر اور وائس پریذیڈنٹ، فرقان احمد سیدنے کمپنی کے با مقصد کارکردگی کے حو الے سے اقدامات پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ پیپسی کو ہمیشہ اس بات کو اہمیت دیتا ہے کہ کاروبار میں طرقی کے ساتھ معاشرے اور ماحول کی بہتری کے لیے بھی کام ہو۔ فرقان سید کا کہنا تھا کہ ہماری توجہ اس بات پر ہے کہ اپنے کاروبار کو بڑھانے کے ساتھ کمیو نٹی کی خوشحالی کے بھی اقدامات کیے جائیں۔

اس تقریب میں پیپسی کو پاکستان کی جانب سے اپنے با مقصد کاردگی کے ایجنڈا کے حوالے سے پاکستان میں کیے گئے اقدامات پر بھی روشنی ڈالی گئی جس میں کاشتکاروں کی استعداد کار کو بہتر بنایا جانا تا کہ بہتر فصل حاصل ہو، پانی کے بہتر استعمال، شجر کاری مہم، کم مراعات یافتہ طبقے کو گرین انرجی کی فراہمی اور گرلز ایجوکیشن کے لیے کیے گئے اقدامات شامل ہیں۔

مزید : کامرس