اقبال نے ہمیں زندہ قو موں کی طر ح زندگی گزارنے کا منشور دیا ، ڈاکٹر صدف

اقبال نے ہمیں زندہ قو موں کی طر ح زندگی گزارنے کا منشور دیا ، ڈاکٹر صدف

لاہور (پ) ادارہ قومی تشخص کے صدرڈاکٹر صدف علی نے کہا ہے کہ علامہ اقبا ل نے دنیا بھر کے مسلمانو ں کو غیر ملکی اقوام خصو صاً اہل یورپ کی تا بعداری اور نقالی چھوڑ کر اسلا می تعلیمات کے مطابق با عزت اور زندہ قو موں کی طر ح زندگی گزارنے کا منشور دیا تھا ، جس سے رو گر دانی کے با عث آج کا مسلمان خو شا مدی اور مردہ قوموں کی طرح ذلیل وخوار زندگی گزارنے پر مجبور ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک بیان میں کیا۔

موقع پر ایک بیان میں کہا ہے کہ علامہ اقبال نے اپنی شاعری کے ذریعے بر صغیر کے مسلمانوں میں آزادی کی روح پھونک دی تھی اور تحریک آزادی 1857ء کے نامور مسلم رہنماؤں سے اظہار یکجہتی کے طور پر ان کے لباس کو اپنا لیا تھا جسے بعد ازاں قا ئداعظم ؒ نے بھی 1940 میں قرارداد پاکستان کے اجلاس کے موقع پر اور بعد ازاں حصول پاکستان کے بعد اسی لباس کو قومی لباس کے طور پر استعمال شروع کردیا تھا کیونکہ وہ سمجھتے تھے کہ جب تک صور ت غلامانہ رہیگی ذہنیت بھی غلامانہ ہی رہیگی۔

انہو ں نے کہا کہ علامہ اقبال نے کس قدر وضاحت کے ساتھ فرمایا تھا کہ:

وضع میں تم ہو تو نصاریٰ تو تمدن میں ہنود

یہ مسلمان ہیں جنہیں دیکھ کر شر مائیں یہود

ڈاکٹر صدف علی نے اپنے خطا ب میں کہا کہ اگر ہمارے سر براہان اس شعر کو اپنا نصب العین اور منشور بنا لیتے تو آج دنیا بھر میں ذلت ورسوائی اور بے بسی کی تصویر نہ بنے ہوتے ، علامہ اقبا ل ؒ نے اگر چہ دوران تعلیم یورپ جا کر مغربی لباس پہناتھا مگر بعد ازاں ان پر حقیقت آشکار ہو گئی تھی کہ اہل یورپ نے کس طرح مسلمانوں کومختلف گروہوں میں تقسیم کرکے بر صغیر میں غلام بنا رکھاہے انہوں نے اپنی شاعری میں مسلمانوں کو خود ی زندہ رکھنے کی تلقین کی تاکہ کسی احساس کمتری کی بجائے خود اعتمادی او ر خود انحصاری کو اپنائیں ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں لارڈمیکالے کے پیرو کا روں نے ہماری نئی نسل کو دوبارہ مغربی غلامی اور تابعداری سکھانی شروع کررکھی ہے ۔ تعلیم کو تجارت بنا دیا گیا ہے انگلش میڈیم سکو لو ں میں والدین غیر شعوری طورپر اپنے بچوں کو غلامی کی ریہرسل کرارہے ہیں جس کے متعلق علامہ صاحب نے فرمایا تھا : اور یہ اہل کلیسا کا نطا م تعلیم ۔ اک شازش ہے فقط دین ومروت کیخلاف ڈاکٹر صدف علی نے آخر میں حکو مت سے مطالبہ کیا کہ ہماری قوم کے معصو م بچو ں کے گلوں کو عہد غلامی کی نشانی نیکٹائی سے آزاد کرایا جائے اور ملک بھر میں یکساں تعلیم اور یکساں لباس رائج کیا جائے تاکہ پاکستان میں قومی تشخص فروغ پا سکے اور ہر طا لب علم کو تعلیم کے یکساں مواقع میسر آسکیں ۔ انہوں نے وزیر اعظم عمران خان سے اپیل کی ہے کہ جس طرح وہ اندرون و بیرون ملک قومی لباس استعمال کر رہے ہیں اپنے دیگر وزراء کو بھی قومی لباس پہننے کی تلقین کر یں ۔ اس سے ان کی عزت اور وقار میں اضافہ ہوگا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1