مقدمے ، فوری گرفتاریاں خواب ، پولیس بجلی چوروں پر مہربان ، ڈیل کا انکشاف

مقدمے ، فوری گرفتاریاں خواب ، پولیس بجلی چوروں پر مہربان ، ڈیل کا انکشاف

ملتان ( سٹاف رپورٹر،وقائع نگار) جنوبی پنجاب میں پولیس کی طرف سے بجلی چوروں کیخلاف مقدمات میں لیت و لعل ‘ ملی بھگت کی شکایات آنے لگیں ۔ اس بارے میں میپکو افسروں و اہلکاروں کا کہنا ہے کہ میپکو سب ڈویژنوں کی جانب سے بجلی چوروں کے خلا ف صدارتی آرڈیننس کے تحت مقدمات کے اندارج کے لئے رپورٹس متعلقہ تھانوں کو بھجوا ئی جاتی ہیں جن پر پولیس مقدمات درج کرنے سے گریز و لیت ولعل سے کام لیتی ہے ۔ میپکو اہلکاروں(بقیہ نمبر42صفحہ7پر )

کو باربار چکر لگوائے جاتے ہیں ۔بمشکل پرچے دئیے جاتے ہیں لیکن ملزمان کو گرفتار نہیں کیا جاتا ۔ شکایات ہیں کہ پولیس بجلی چوروں کے ساتھ ملی بھگت کرکے ان کو ریلیف دیتی ہے ۔ میپکو کو بجلی چوروں کے خلاف کارروائی کی معلومات تک فراہم نہیں کی جاتی ہیں ۔ استفسار کرنے پر پولیس اہلکار جواب دیتے ہیں کہ وہ میپکو کو تفصیلات بتانے کے پابند نہیں ہیں ۔ میپکو ذرائع کے مطابق ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں ایک تو مختلف تھانوں اور چوکیوں پر ڈائریکٹ سپلائی سے بجلی چوری کی جا رہی ہے دوسری جانب بجلی چوروں کے خلاف کارروائی میں تعاون بھی نہیں کیاجا رہا ہے ۔یہ صورتحال سب کے علم میں ہے مگر کارروائی نہیں ہو سکی ہے ۔ادھرایڈیشنل سیشن جج ملتان نے چوری کا مقدمہ درج نہ کرنے پر ایس ایچ او تھانہ قطب پور سے13 نومبر کو جواب طلب کرلیا ہے جبکہ درخواست گزار کو پولیس کے اعلیٰ افسران کے سامنے ثبوت پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ فاضل عدالت میں عطاء اللہ نے درخواست دائر کی تھی کہ اس نے زرگل کو اپنے گھر میں المونیم نصب کرنے کا ٹھیکہ ایک لاکھ 38 ہزار میں دیا جبکہ چند روز بعد گاؤں سے واپس آیا تو سامان غائب تھا اور زرگل بھی موجود نہ تھا اس تمام معاملہ پر متعلقہ تھانے میں درخواست دی تاہم مقدمہ دائر نہیں کیا جارہا لہذا مقدمہ درج کرکے رقم کی ادائیگی کروائی جائے۔

ڈیل

مزید : ملتان صفحہ آخر