خیبرپختونخوا کی شوگر انڈسٹری بحران کا شکار

خیبرپختونخوا کی شوگر انڈسٹری بحران کا شکار

خانقا ہ شریف (نمائندہ پاکستان)مو جودہ چینی کی قیمتو ں کے مطا بق خیبر پختو نخواہ کی شو گر ملیں گنے کی فصل کی قیمت 120روپے فی من سے زیادہ ادا نہیں کر سکتیں ملک بھر کی طر ح خیبر پختو (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

نخواہ کی شو گر ملیں بھی آ ئندہ کر شنگ سیزن 2018-19 شروع ہو نے سے پہلے شد ید بحران کا شکار ہو گئیں۔ تفصیل کے مطا بق پا کستان شو گر ملزایسوسی ایشن کے خیبر پختو انخواہ زون نے وفا قی اور اپنی صو با ئی حکو متو ں کو خط لکھ کر مطلع کر د یا ہے کہ پا کستان کی د یگر شو گر انڈسٹر ی کی طر ح خیبر پختوانخواہ کی شو گر ملیں بھی شد ید بحران کا شکار ہیں جس کی بنیادی وجہ چینی کی پیداواری لا گت کی قیمت اور گنے کی فصل کی قیمتو ں کا آ پس میں مطا بقت نہ ہو نا ہے عا م ما ر کیٹ میں چینی کی قیمت اس وقت 49.50 ہے جس کے مطا بق گنے کی فی من قیمت 120روپے بنتی ہے جبکہ مو جود ہ حکو مت نے اس وقت آ ئند ہ کر شنگ سیزن کے لیے گنے کی فی من قیمت 180رو پے مقرر کر د ی ہے جس کے حسا ب سے چینی کی ما ر کیٹ قیمت 64.50بنتی ہے جو کہ ما ر کیٹ میں نہیں ہے اس صو ر تحا ل میں اگرخیبر پختو نخواہ کی شو گر ملیں کر شنگ کا آ غاز کر تی ہیں توانہیں 15رو پے فی کلو کے حساب سے خسارے کا سا منا کر نا پڑ ے گا جبکہ اس وقت ملک میں 28لا کھ ٹن چینی وافر مقدار میں مو جو د ہے اس ساری صورتحا ل کے پیش نظرخیبر پختو ا نخواہ کی شو گر ملو ں نے حکو مت سے یہ مطا لبا ت کیے کہ وہ صرف اس صورت میں ملیں چلا ئیں گے کہ اگر ا نہیں چینی کی قیمت 64.50 روپے خرید کر نے کی یقین دہا نی کر وا د ی جا ئے تو پھر ان کی شو گر ملیں 180روپے فی من گناکی فصل کی قیمت کا شتکا ر وں کو ادا کرنے کی پو ز یشن میں ہو ں گی یا پھر خیبر پختوانخواہ کی صو با ئی حکو مت 60روپے فی من گنے کی قیمت صو بے کی شو گر ملو ں کو بطور سبسڈ ی ادا کر ے جیسا کہ پچھلے سا لو ں میں سند ھ حکو مت نے اپنے صو بے کی شو گر ملو ں کو اداکیے تھے اور اس کے سا تھ ہی ایف بی آر نے چینی کی قیمت 60روپے فی کلو پر سیلز ٹیکس و صو ل کر رہاہے جبکہ ما رکیٹ میں اصل قیمت چینی کی اس بہت کم ہے اس طر ح کے ظالما نہ ٹیکس قوانین سے شو گر ا نڈ سٹر ی اور عا م عوام کے سا تھ سراسر نا ا نصا فی پر مبنی ہے ایف بی آ ر چینی کی مارکیٹ قیمت پر ہی سیلز ٹیکس وصو ل کر ے اور اس کے سا تھ ہی ا بھی تک حکو مت کے ذ مہ چینی کی ا یکسپورٹ سبسڈ ی کی مد میں شو گر ملو ں کی واجب الادارقم 16ارب روپے ہے جو کہ اب تک ان کو ادا نہیں کی گئیں اس وقت شو گر ملیں ایکسپورٹ سبسڈی کی رقوم کی ادائیگی کے بغیر ابھی اس قا بل نہیں کہ وہ رقوم حا صل کیے بغیر چل سکیں اس کے علا وہ 3فیصد اضافی سیلز ٹیکس کو بھی ختم کیا جا ئے جو چینی کے ان خریداروں سے لیا جا تا ہے جو سیلز ٹیکس قانون کے مطابق رجسٹر نہیں ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر