پاور سیکٹر کے نقصانات تشویشناک ، آئی ایم ایف

پاور سیکٹر کے نقصانات تشویشناک ، آئی ایم ایف

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر )انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ ( آئی ایم ایف) نے پاکستانی حکام کیساتھ مذاکرات میں پاور سیکٹر کے نقصانات پر تشویش کا اظہار کیا۔ذرائع کے مطابق پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان تیسرے روز کے مذاکرات کا دور ختم ہوگیا،جس میں آئی ایم ایف نے پاو ر سیکٹر کی کارکردگی و صلاحیت کے پیش کردہ جائزہ کے بعد پاور سیکٹر کے نقصانات پر تشویش کا اظہار کیااور پاکستان کو بجلی بقایاجات کی وصولی کیلئے بہتری ، پاور سیکٹر کے گردشی قرضوں کے مستقل حل کے اقدامات کرنے کا کہا ۔آئی ایم ایف کے مطابق گردشی قرضے معیشت کے دو سر ے شعبوں کو بھی متاثر کررہے ہیں جبکہ نقصان میں جانیوالی بجلی تقسیم کار کمپنیوں میں اصلاحات کا عمل تیز کیا جائے۔مذاکرات میں آئی ایم ایف وفد کو بریفنگ دی گئی کہ بجلی پر سبسڈی کو صرف کم آمدن افراد تک محدود کیا ہے اور بجلی چوری کی روک تھام کیلئے ملک بھر میں اقدامات شر وع کردیئے ہیں۔یاد رہے گزشتہ روز پاکستانی پاور سیکٹر میں نقصانات اور وصولیوں کی تفصیلات آئی ایم ایف کے فراہم کی گئی تھیں۔آئی ایم ایف کی ٹیم ابتدائی طور پر صرف معیشت کے مختلف شعبوں سے متعلق اعداد و شمار پر بریفنگ لے رہی ہے اور 12 نومبر سے شروع ہونے والے پالیسی سطح کے مذاکرات میں ان پر اپنا نکتہ نظر پیش کرے گی۔پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کا سلسلہ 20 نومبر تک جاری رہے گا، حال ہی میں وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف پروگرام سے پاکستان کو 5 سے 6 ارب ڈالر ملیں گے۔

مزید : صفحہ اول