سزا معطلی کیس،نواز شریف کی لیگل ٹیم کی بنچ پرا عتراض کیلئے مشاورت

سزا معطلی کیس،نواز شریف کی لیگل ٹیم کی بنچ پرا عتراض کیلئے مشاورت

لاہور(سعید چودھری)اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف نیب اپیل کی سماعت کرنیوالے سپریم کورٹ کے بنچ پر اعتراض کیلئے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کی لیگل ٹیم کے درمیان مشاورت کی اطلاعات ہیں ۔ایون فیلڈ اپارٹمنٹس ریفرنس میں نواز شریف ،ان کی صاحبزادی مریم نوازاور داماد کیپٹن (ر) محمد صفدر کو احتساب عدالت کی طرف سے ملنے والی سزائیں ا سلام آباد ہائی کورٹ کے ڈویژن بنچ نے 19ستمبر کو معطل کرتے ہوئے انہیں 5،5لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانت پر رہاکرنے کا حکم دیا تھا،اسلام آباد ہائی کورٹ کے اس فیصلے کیخلاف نیب نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کررکھی ہے جس کی سما عت چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں قائم بنچ کررہا ہے ۔ فاضل چیف جسٹس نے انجیوپلاسٹی کے باعث 6نومبر کو اس ایک کیس کے سوا اپنی عدالت کی تمام پیشی فہرست منسوخ کردی تھی ۔دوران سماعت انہوں نے بتایا تھا ایک ڈاکٹر کمرہ عدالت سے متصل دوسرے کمرہ میں ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار بیٹھا ہے۔چیف جسٹس نے یہ ریما رکس بھی دیئے تھے کہ بادی النظر میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو معطل کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے ۔ذرائع کے مطا بق نیب اپیل کے حوالے سے تیاری کیلئے نواز شریف اور ان کی لیگل ٹیم کے درمیان مشاورت کے دوران سپریم کورٹ کے اس بنچ پر اعتراض اٹھانے کے آپشن پر بھی غور کیا گیا،لیگل ٹیم کے بعض ارکان کا کہنا ہے اس کیس میں چیف جسٹس کی سربر ا ہی میں قائم بنچ اپنا ذہن آشکار کرچکاہے ،اسلئے مناسب نہیں ہوگایہ بنچ اس کیس کی مزید سماعت کرے ۔ذرائع نے دعویٰ کیا ہے بنچ پر اعتراض کیلئے لیگل ٹیم گراؤنڈز تیار کررہی ہے ،لیگل ٹیم کے ایک رکن نے پاکستان کو بتایا کہ یہ ایک حساس معاملہ ہے ،بنچ پر اعتراض کرنے یا نہ کرنے کا حتمی فیصلہ بہت سوچ بچار کا متقاضی ہے ،اس کیس کی آئندہ سماعت12نومبر کوہوگی اور اس سے قبل کوئی حتمی فیصلہ کرلیا جائے گا۔

مشاورت

مزید : صفحہ اول