پانی چوری کا مسئلہ مشترکہ مفادات کونسل میں حل ہو گا ، سیکرٹری آبی وسائل

پانی چوری کا مسئلہ مشترکہ مفادات کونسل میں حل ہو گا ، سیکرٹری آبی وسائل

اسلام آباد(آئی این پی )سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے آبی ذخائر میں بلوچستان کا پانی چوری ہونے پر سیکرٹری آبی وسائل نے بتایا کہ مشترکہ مفادات کونسل آئندہ اجلاس میں صوبوں کے پانی چوری کے مسئلے پر اہم فیصلہ کرے گی، کمیٹی کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ واپڈا نے نولنگ ڈیم کا پی سی ون 27 ارب اور بلوچستان حکومت نے23ارب رو پے کا بنایا ہے، نولنگ ڈیم پر ایشین ڈولپمنٹ بینک بھی فنڈنگ کرنے کیلئے تیار ہے، صوبوں کے درمیان پانی چوری کا مسئلہ مشترکہ مفادات کونسل میں حل ہوجائے گا،پانی چوری روکنے کیلئے اہم مقامات پر جدید میٹر نصب کر رہے ہیں جس سے ہر صوبے کو اس کے حصے کا پانی ملے گا، کمیٹی ارکان نے کہا کہ سندھ پانی کی کمی کا شور سب سے زیادہ مچاتا ہے لیکن بلوچستان کا سب سے زیادہ پانی سندھ استعمال کر رہا ہے، بلوچستان کو اس کا حق ادا کرنا ہوگا،نولنگ ڈیم پر واپڈا کا پی سی ون27ارب اوربلوچستان حکومت کا23ارب کا ہے جو ہمارے اداروں کی صلاحیت پر سوالیہ نشان ہے۔پی سی ون پر حتمی فیصلہ کرنے کیلئے کمیٹی نے تین رکنی سب کمیٹی تشکیل دے دی ۔

سیکریٹری آبی وسائل

مزید : صفحہ آخر