آئی ایم ایف سے مذاکرات کی تفصیلات پارلیمنٹ میں پیش کرنے کا مطالبہ

آئی ایم ایف سے مذاکرات کی تفصیلات پارلیمنٹ میں پیش کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) سینیٹ اجلاس میں اپوزیشن اراکین نے آئی ا یم ایف وفد کی پاکستان آمد کی تفصیلات پارلیمنٹ میں پیش ، بلو چستا ن اور کراچی کی ساحلوں میں غیر قانونی فشنگ ٹرالرز کی آمد کو آبی حیات کیلئے نقصان دہ قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی عائد جبکہ عافیہ صدیقی کی رہائی کے حوالے سے امریکی حکومت کیساتھ بات چیت کرنے کے مطالبات کر دیئے ۔جمعہ کے روز سینٹ اجلاس میں عوامی مسا ئل پر بات کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمن نے کہاآئی ایم ایف کا وفد پاکستان آیا ہے اس حوالے سے حکومت پارلیمنٹ کو آگاہ کرے کہ ان کیساتھ کیا شرائط طے ہوئی ہیں ،اسوقت ملک میں مہنگائی کی وجہ سے غریب آدمی بہت پریشان ہے بجلی و گیس کی قیمتوں میں ا ضا فے نے متوسط طبقے کی رہی سہی کسر بھی نکال دی ہے ،حکومت کی ملک کو درپیش مسائل حل کرنے کی جانب سے کسی قسم کی حکمت عملی نظر نہیں آرہی ہے اور نہ ہی پارلیمنٹ کو اعتماد میں لیا جارہا ہے،ضرورت اس امر کی ہے حکومت آئی ایم ایف سمیت تمام بین الاقوامی معاہدوں سے پارلیمنٹ کو آگاہ کرے، جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا امریکہ میں قید عافیہ صدیقی کی رہائی کے حوالے سے حکومت نے کیا اقدامات کئے ہیں ،پوری قوم عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے امید میں ہے ،سینیٹر میر کبیر محمد شاہی نے کہا بلوچستان میں بین الاقوامی سا حلوں کے قریب فشنگ ٹرالر زغیر قانونی طور پر مچھلیوں کا شکار کرتے ہیں اور پاکستان کے ساحلوں سے ساری مچھلی پکڑ کر لے جاتے ہیں اس حوالے سے بین الاقوامی سطح پر بھی پاکستان کو کئی بار تنبیہ کی جاچکی ہے تاہم اس پر عمل درآمد نہیں ہورہا ہے، کراچی اور بلوچستان کے محکمہ فشریز کے حکام کی ملی بھگت سے یہ سارا کاروبار ہورہا ہے اور ایک وقت ایسا آئے گا جب پاکستا ن کے ساحلوں پر مچھلیاں ختم ہوجائیں گی،حکومت روک تھام کے حوالے سے فوری اقدامات کرے ، وزیر اعظم سکالر شپ سکیم کے تحت بلوچستان کے طلباء کو برنال کالج ایبٹ آباد میں داخلہ د یا گیا تاہم اب فنڈز دستیاب نہ ہونے پر ان طلباء کو نکالا جارہا ہے، اس کا بھی نوٹس لیا جائے ،جبکہ سینیٹ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہو ئے وزیر مملکت مراد سعید نے دعویٰ کیا کہ حکو مت ایک کروڑ نوکریاں دینے کے وعدے پر عملدرآمد کررہی ہے۔

اپوزیشن مطالبہ

مزید : صفحہ آخر