ایم ڈی پی ٹی وی کے تقرر میں وزارت خزانہ کا کردار نہیں : اسحاق ڈار

ایم ڈی پی ٹی وی کے تقرر میں وزارت خزانہ کا کردار نہیں : اسحاق ڈار

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر )سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ ایم ڈی پی ٹی وی کی تقرری میں وزارت خزانہ کا کوئی کردار نہیں ہوتا ، وزیر اعظم وزیر اطلاعات و نشریات اورسیکرٹری اسٹیبلشمنٹ کی توثیق کے بعد اس کی منظوری دیتے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق ایم ڈی پی ٹی وی تقرری کیس میں سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار سپریم کورٹ میں ا پنے جواب میں کہا کہ ایم ڈی پی ٹی وی کی تقرری میں وزارت خزانہ کا کوئی کردار نہیں ہوتا جبکہ وزیر اطلاعات و نشریات اورسیکرٹری اسٹیبلشمنٹ کی توثیق کے بعد ہی وزیر اعظم اس کی منظوری دیتے ہیں اور عطاء الحق قاسمی کی تقرری کی منطوری وزیراعظم نے بھی قوانین کے مطابق وزارت اطلاعات و نشریات اور سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ کی توثیق کے بعد ہی دی ہے جس کے بعد وزارت خزانہ کو ان کی تنخواہ اور مراعات کیلئے سمری بھیجی گئی جس میں ان کی قابلیت اورتجربے کی بنیاد پر ان کی تنخواہ پندرہ لاکھ ماہانہ مقرر کی گئی جو کہ ختمی تھا اور اس میں کوئی اضافی مراعات قابل قبول نہیں تھیں۔ انہوں نے کہا اسی بنیاد پر تقریبا اٹھارہ لاکھ روپے کی دائیگی تین سال کی مدت کیلئے کی گئی اور مقررہ حد سے زیادہ اخراجات کی صورت میں پی ٹی وی انتظامیہ ہی ان کیلئے جوابدہ ہے۔ نجی ٹی وی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا کہ انہوں نے اپنا موقف 15جولائی کو سپریم کورٹ بھجوایا تھا جس میں بتایا تھا کہ ایم ڈی پی ٹی وی کیلئے آنے والی منظوری وزارت خزانہ کے ذریعے وزیر اعظم ہاوس بھیجی جاتی ہے ۔ سابق وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ وہ ایم ڈی پی ٹی وی کیس میں کسی بھی قسم کی ادائیگی نہیں کریں گے۔ سابق وزیر خزانہ کے جواب کے مطابق خرابی صحت کے باعث وہ خود عدالت میں حاضر نہیں ہوئے ۔

مزید : صفحہ آخر