آسیہ مسیح کیس میں کسی بیرونی دباؤ کو خاطر میں نہیں لانا چاہیے : حافظ سعید

آسیہ مسیح کیس میں کسی بیرونی دباؤ کو خاطر میں نہیں لانا چاہیے : حافظ سعید

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعۃالدعوۃ پروفیسر حافظ سعید نے کہا ہے کہ مولانا سمیع الحق کے بہیمانہ قتل پر حکومتی خاموشی درست نہیں ،ان کی شہادت میں ملوث درندوں کو فی الفور گرفتار اور دنیا کے سامنے بے نقاب کرنا انتہائی ضروری ہے ، سیکولر لابی سوشل میڈیا پر مولانا سمیع الحق کے خلاف گمراہ کن پروپیگنڈہ کر رہی ہے۔ان کی شہادت میں اسلام اور پاکستان دشمن قوتیں ملوث ہیں۔آسیہ مسیح کیس میں کسی بیرونی دباؤ کو خاطر میں نہیں لانا چاہیے۔وہ جامع مسجد القادسیہ میں نماز جمعہ کے ایک بڑے اجتماع سے خطاب کر رہے تھے۔جماعۃالدعوۃ کے زیر اہتمام ملک بھر کی مساجدمیں خطبات جمعہ کے دوران مولانا سمیع الحق کے قاتلوں کی فی الفور گرفتاری کا مطالبہ کیا گیا اور مذمتی قراردادیں پاس کی گئیں۔ حافظ محمد سعید نے مزید کہاحکومت کو چاہیے کہ وہ سوشل میڈیا پر مولا نا سمیع الحق کیخلاف بے بنیاد الزام تراشیوں کا نوٹس لے، صحیح انداز میں تفتیش کی جائے اور ان کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کیا جائے۔دریں اثنا پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ، سیف اللہ خالد، محمد یعقوب شیخ اور دیگر رہنماؤں نے مختلف شہروں میں نماز جمعہ کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مولانا سمیع الحق کے بہیمانہ قتل سے پوری مسلم امہ کو شدید صدمہ پہنچا ہے۔ انہیں شہید کرنا وطن عزیز پاکستان کو عدم استحکام کی صورتحال سے دوچار کرنے کی بین الاقوامی سازش کا نتیجہ ہے۔مولانا سمیع الحق کے قاتلوں کو فی الفورگرفتار کر کے وطن عزیز پاکستان کیخلاف گہری سازش کا پردہ چاک کیا جائے۔

حا فظ سعید

مزید : صفحہ آخر