خیبر پختونخوا کے اضلاع میں 12نومبر سے پولیس مہم کا آغاز ہو گا

خیبر پختونخوا کے اضلاع میں 12نومبر سے پولیس مہم کا آغاز ہو گا

پشاور(سٹی رپورٹر) صوبہ خیبر پختو نخواکے18اضلاع میں12نومبر پیرکے روز سے تین روزہ انسداد پولیو مہم کا آغاز کیا جارہاہے پولیو مہم کے دوران پانچ سال سے کم عمر کے46 لاکھ 43ہزارسے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے اس اہم انسدادپولیو مہم کے انتظامات کے سلسلے میں ایمر جنسی آپر یشن سنٹر(ای او سی)خیبر پختو نخوامیں ایک اعلی سطحی اجلاس ای او سی کوآرڈینیٹر محمد عابد خان کی صدارت میں منعقد ہوا اجلاس میں صوبائی محکمہ صحت اورای پی آئی کے اعلی حکام، عالمی ادارہ اطفال (یو نیسیف ) ، ڈبلیو ایچ او، بی ایم جی ایف ،این سٹاف اور دیگر معاون اداروں کے نمائندوں نے بھی شرکت کی اجلاس کے شرکاء نے پیر 12نومبرسے شروع ہونے والی انسداد پولیو مہم کے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا اور پولیو کے موذی وائرس کے خاتمے کے لیے نتیجہ خیز اقدامات سے متعلق تجاویز اور حکمت عملی پر اتفاق کیا ای او سی کوآرڈینیٹر محمد عابد خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس خصوصی پولیو مہم کو زیادہ سے زیادہ موثر انداز میں چلانے کے لئے تمام تر انتظامات کئے گئے ہیں اس موقع پر انہوں نے شاہین مسلم ٹاون پر خصوصی توجہ دینے کی بھی ہدایت کی پیرکے روز سے شروع ہونے والی مہم پولیو کے حوالے سے خیبر پختونخوا کے18 اضلاع پشاور،چاسدہ،نوشہرہ ،مردان ،صوابی،ملاکنڈ، سوات ، لوئر دیر، اپر دیر، بٹگرام،چترال،بنوں، کوہاٹ،ٹانک،ہنگو،کرک،لکی مروت اورڈیرہ اسماعیل خان میں چلائی جارہی ہے جو ان اضلاع کی مقامی آبادی کے ساتھ ساتھ یہاں واقع افغان مہاجرین اور ٹی ڈی پیز کے کیمپوں میں بھی چلائی جارہی ہے مہم کے دوران پانچ سال سے کم عمر کے46لاکھ 43 ہزار652بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے اس مقصدکے لئے تر بیت یا فتہ پولیو ورکزر پر مشتمل21ہزار 138ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ان پولیو ٹیموں میں 15ہزار70موبائل ٹیمیں،1ہزار175فکسڈ ٹیمیں،799 ٹرانزٹ ٹیمیں اور 149رومنگ ٹیمیں شامل ہیں جبکہ مہم کی موثر نگرانی کے لئے3ہزار945ایریا انچا رجز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے انسداد پولیومہم کے دوران پولیس اوردیگر قا نون نافذ کرنے والے اداروں کے تعاون سے سیکو رٹی کے خاطر خواہ انتظامات کئے گئے ہیں محمد عابد خان نے معاشرے کے تمام طبقات پر زور دیا کہ مستقبل کو پولیو کے ہاتھوں معذوری سے بچانے اور ایک صحت مند معاشرے کی تشکیل کے لئے اس پولیو مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول