”جب تک ایشوریا کو طلاق نہیں ہوتی میں گھر نہیں جاﺅں گا “ گزشتہ کئی روز سے لاپتا بھارت کے معروف سیاستدان کے مطالبے سے بھارت میں بھونچال آگیا

”جب تک ایشوریا کو طلاق نہیں ہوتی میں گھر نہیں جاﺅں گا “ گزشتہ کئی روز سے ...
”جب تک ایشوریا کو طلاق نہیں ہوتی میں گھر نہیں جاﺅں گا “ گزشتہ کئی روز سے لاپتا بھارت کے معروف سیاستدان کے مطالبے سے بھارت میں بھونچال آگیا

  

پٹنہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) اپنی بیوی سے طلاق کیلئے عدالت سے رجوع کرنے کے بعد سے لاپتا بھارتی ریاست بہار کے سابق وزیر اعلیٰ لالو پرساد یادو کے بڑے صاحبزادے اور ریاست کے سابق وزیر صحت تیج پرتاپ یادو منظر عام پر آگئے ہیں۔ انہوں نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ وہ اپنی مرضی سے گھر سے باہر ہیں اور جب تک ان کے اہلخانہ ان کے طلاق دینے کے فیصلے کی مخالفت کرتے رہیں گے وہ گھر نہیں آئیں گے۔

بھارتی ریاست بہار کے سابق وزیر اعلیٰ لالو پرساد یادو کے بڑے بیٹے اور سابق وزیر صحت تیج پرتاپ یادو نے گزشتہ دنوں اپنی اہلیہ ایشوریا کو طلاق دینے کیلئے عدالت سے رجوع کیا تھا۔ درخواست دینے کے بعد انہوں نے اپنے والد لالو پرساد یادو سے ملاقات کی اور لاپتا ہوگئے ۔ کچھ روز تک لاپتا رہنے کے بعد تیج پرتاپ اب منظر عام پر آگئے ہیں اور کہا ہے کہ وہ اپنے طلاق کے فیصلے سے کسی بھی قیمت پر پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں، گھٹ گھٹ کر جینے سے بہتر ہے کہ وہ شادی کے بندھن سے الگ ہوجائیں “۔

بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے تیج پرتاپ نے کہا کہ انہوں نے شادی سے پہلے بھی اپنے والدین سے کہا تھا کہ یہ شادی قائم نہیں رہ سکے گی لیکن ان کی نہ پہلے کسی نے سنی اور نہ اب کوئی سن رہا ہے۔ ” جب تک میرے گھر والے اس طلاق پر راضی نہیں ہو جاتے میں گھر واپس کیسے آسکتا ہوں“۔

یاد رہے کہ تیج پرتاپ اور ایشوریا کی شادی رواں سال 12 مئی کو ہوئی تھی۔انہوں نے پٹنہ سول کورٹ کی فیملی کورٹ میں ایشوریا سے طلاق کیلئے درخواست داخل کی ہے جس پر29 نومبر کو سماعت ہونے والی ہے۔

مزید : بین الاقوامی