آشیانہ ہاﺅسنگ سکینڈل،کمرہ عدالت میں تفتیشی افسراورشہبازشریف کے درمیان تلخ کلامی

آشیانہ ہاﺅسنگ سکینڈل،کمرہ عدالت میں تفتیشی افسراورشہبازشریف کے درمیان تلخ ...
آشیانہ ہاﺅسنگ سکینڈل،کمرہ عدالت میں تفتیشی افسراورشہبازشریف کے درمیان تلخ کلامی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)آشیانہ ہاﺅسنگ سکینڈل میں گرفتار سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کو احتساب عدالت میں پیش کردیا گیا، احتساب عدالت کے جج سید نجم الحسن ریفرنس کی سماعت کر رہے ہیں۔

نیب پراسیکیوٹر نے شہبازشریف کے 15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کردی، ہمیں شہبازشریف اور فیملی سے متعلق مشکوک ٹرانزیکشن ملی ہیں ،ابھی ہم نے اس حوالے سے مزیدتفتیش کرنی ہے،قومی اسمبلی اجلاس اورمصروفیت کے باعث تفتیش مکمل نہیں کرسکے،تفتیشی افسر نے کہا کہ حلفاً کہتاہوں شہبازشریف کے پاس تفتیش کیلئے گیا، تو شہبازشریف نے آنکھیں دکھائیں،سابق وزیراعلیٰ نے کہامجھ سے تفتیش کیوں کرنی ہے؟۔

اس پر کمرہ عدالت میں تفتیشی افسراور شہبازشریف کے درمیان تلخ کلامی ہو گئی،شہبازشریف نے تفتیشی افسر کاجواب دیتے ہوئے کہا کہ میں نے ایسی حرکت کبھی نہیں کی،امجد پرویزنے شہبازشریف کوخاموش رہنے کااشارہ دیدیا جس پر سابق وزیراعلیٰ خاموش ہو گئے۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور