دفتر میں فحش فلمیں دیکھنے والا وکیل ایسے انداز میں رنگے ہاتھوں پکڑا گیا کہ جان کر آپ کی ہنسی نہ رکے

دفتر میں فحش فلمیں دیکھنے والا وکیل ایسے انداز میں رنگے ہاتھوں پکڑا گیا کہ ...
دفتر میں فحش فلمیں دیکھنے والا وکیل ایسے انداز میں رنگے ہاتھوں پکڑا گیا کہ جان کر آپ کی ہنسی نہ رکے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانوی دارالحکومت لندن میں ایک وکیل اپنے دفتر میں بیٹھا فحش فلمیں دیکھ رہا تھا اور ایسے انداز میں رنگے ہاتھوں پکڑا گیا کہ سن کر آپ کے لیے ہنسی روکنا مشکل ہو جائے گا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ وکیل ہوگن لوویلز نامی لیگل فرم میں کام کرتا تھا اور وہیں اپنے آفس میں بیٹھا یہ غیراخلاقی حرکت کر رہا تھا۔ اس کے آفس کے دوسری طرف ایک مخالف لیگل فرم آئروین مشعیل کا دفتر تھا اور دونوں فرمز کے دفاتر کے درمیان ایک تنگ گلی تھی۔ چنانچہ آئروین مشعیل کے دفتر سے ہوگن لوویلز کے دفتر میں بخوبی دیکھا جا سکتا ہے۔

مذکورہ وکیل جب دفتر کے کمپیوٹر پر فحش فلم دیکھ رہا تھا تو اس کی پشت آئروین مشعیل کے دفتر کی طرف تھی۔ یوں اس دفتر سے اس کے کمپیوٹر کی سکرین واضح دیکھی جا سکتی تھی، جس کا اسے احساس ہی نہ ہوا۔ وہ پوری طرح فحش فلم دیکھنے میں مشغول تھا کہ دوسری فرم کے دفتر میں موجود ایک وکیل نے یہ منظردیکھ لیا۔ اس نے اپنے موبائل فون سے وکیل کی اس حرکت کی ویڈیو بنائی اور ہوگن لوویلز کے دیگر وکلاءکو بھیج دی۔ یہ ویڈیو ہوگن لوویلز کے ایچ آرڈیپارٹمنٹ تک پہنچ گئی اور فحش فلمیں دیکھنے والے اس وکیل کو نوکری سے ہی ہاتھ دھونا پڑ گئے۔ اب اسے نوکری سے معطل کرنے کے بعد اس کے خلاف تحقیقات بھی کی جا رہی ہیں۔ہوگن لوویلز کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ”ہمیں اپنے ایک وکیل کے دفتر میں فحش فلمیں دیکھنے کے بارے میں پتا چلا۔ اس طرح کا رویہ قطعی ناقابل قبول ہے۔ اس وکیل کو معطل کر دیا گیا ہے اور اس کے خلاف تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس