عمران خان نے جس کو وزیراعلیٰ بنایا ہم اس کو سپورٹ کررہے ہیں،چوہدری سرور سے اچھے تعلقات ہیں اور مستقبل میں بھی رہیں گے: چودھری پرویز الٰہی 

عمران خان نے جس کو وزیراعلیٰ بنایا ہم اس کو سپورٹ کررہے ہیں،چوہدری سرور سے ...
عمران خان نے جس کو وزیراعلیٰ بنایا ہم اس کو سپورٹ کررہے ہیں،چوہدری سرور سے اچھے تعلقات ہیں اور مستقبل میں بھی رہیں گے: چودھری پرویز الٰہی 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے کہاکہ 10سال آپ نے سناٹا دیکھاہے، عمران خان نے جس کو وزیراعلیٰ بنایا ہم اس کو سپورٹ کررہے ہیں,چوہدری سرور کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں اور مستقبل میں بھی رہیں گے،اگر ہم گھر میں بیٹھ کر بھی بات نہیں کریں گے تو پارٹی کیسے چلے گی؟ طارق بشیر کو پرانا گلہ ہے کہ ان کے حلقے میں مداخلت ہورہی ہے اور یہ دو تین حلقوں میں ہے،گھر کی کہانی کسی کو نہیں دینی چاہیے۔

نجی ٹی وی کے مطابق ’’ویڈیو لیک ‘‘ ہونے کے بعد لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ گلہ کرنے کا مقصد شکایت کو دور کرنا ہوتا ہے،کارکنوں کےبھی گلےہم سنتےہیں کچھ جائزہوتےہیں کچھ انکی غلط فہمیاں ہوتی ہیں،اگر ہمارا رکن ہم سے گلہ نہیں کرے گا تو اس کا مسئلہ کیسے حل ہوگااورتحفظات کیسے دور ہوں گے؟ گلہ دور نہ ہوتو غصہ سیکرٹ بیلٹ پر نکلتا ہے،اتحادی حکومتوں میں کئی مرتبہ ایسی صورتحال آتی ہے جس میں پارٹی کے لوگ نظر انداز ہوتے ہیں،اس وجہ سے اگر پارٹی کے لوگوں کی نہیں سنیں گے تو کام آگے نہیں چلتا۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی پارٹی کے داخلی اجلاس کی ویڈیو آئے گی تو اسی قسم کی ہوگی،پارٹی میں جب گلے شکوے ہوتے ہیں تو بیٹھ کر بات کی جاتی ہے ،طارق بشیر چیمہ کو بھی اپنے حلقےسے متعلق کچھ گلے شکوے تھے،پارٹی میٹنگ میں گلے ہوتے ہیں جن کو دور کیا جاتا ہے،طارق بشیر چیمہ کو شکایت ہے کہ ان کے حلقے میں مداخلت ہوتی ہے،یہ شکایت ایک حلقے میں نہیں دو تین حلقوں میں ہے،تحریک انصاف کے اجلاس میں بھی اپنی قیادت سے گلے شکوے ہوتے ہیں،گھر کے اندر کی کہانی اگر آپ باہر دیں گے تو یہ بہتر نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی سے اتحاد ہے جو مسائل آتے ہیں بیٹھ کر ٹھیک کرلیتے ہیں،ہم نیک نیتی سے عمران خان کیساتھ چل رہےہیں اوران کو سپورٹ کررہےہیں۔انہوں نے کہا کہ10سال آپ نے سناٹا دیکھاہے، شہبازشریف کےدور ایساہوتا  تو تھانااور پولیس پہنچ جاتی۔سپیکر پنجاب اسمبلی کا کہنا تھا کہ گھر کی کہانی کسی کو نہیں دینی چاہیے، چوہدری سرور کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں اور مستقبل میں بھی رہیں گے، کسی کو کوئی بندہ مداخلت کرنے سے روک نہیں سکتا البتہ مداخلت کا پتا چلے گا تو ٹھیک ہوجائے اور یہ معاملہ بھی ٹھیک ہوجائے گا۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور