نوجوان لڑکی کی غیر اخلاقی تصاویر چرا کر خود کشی پر مجبور کر دیا گیا

نوجوان لڑکی کی غیر اخلاقی تصاویر چرا کر خود کشی پر مجبور کر دیا گیا
نوجوان لڑکی کی غیر اخلاقی تصاویر چرا کر خود کشی پر مجبور کر دیا گیا

  

برمنگھم(نیوز ڈیسک)سوشل میڈیا کا استعمال عام ہونے کے جہاں بہت سے مثبت پہلو ہیں تو وہیں کچھ منفی باتیں بھی سامنے آ رہی ہیں۔ سوشل میڈیا کے ذریعے لوگوں کی کردار کشی، اور خصوصاً خواتین کی قابل اعتراض تصاویر شئیر کر کے اُن کی زندگی برباد کرنا بھی ایک عام مسئلہ بن گیا ہے۔ اسی افسوسناک مسئلے کا نشانہ ایک نوجوان برطانوی لڑکی بنی، جو ساری دنیا کے سامنے اپنی توہین و تضحیک سے اتنی دلبرداشتہ ہوئی کہ اپنی زندگی ختم کرنے کی کوشش کر ڈالی۔

اخبار ڈیلی سٹار کے مطابق اس افسوسناک واقعہ کی ذمہ دار بھی ایک لڑکی ہی ہے۔ یہ 28 ریچل ڈیل ہے جس نے اپنے بوائے فرینڈ کی سابقہ گرل فرینڈ کی غیر اخلاقی تصاویر حسد میں مبتلا ہو کر سوشل میڈیا پر پوسٹ کیں۔ اسے یہ تصاویر اپنے بوائے فرینڈ ایلکس منٹگمری کے فون پر ملی تھیں۔

ریچل نے پہلے یہ تصویریں سوشل میڈیا پر اپنے آن لائن فرینڈز کو پوسٹ کیں اور پھر لڑکی کو دھمکی دی کہ اگلے روز وہ انہیں انٹرنیٹ کی مختلف سوشل میڈیا ویب سائٹوں پر پوسٹ کر دی گی۔ اس کی نوبت نہیں آئی کیوں پہلے ہی یہ تصویریں ہر طرف عام ہو چکی تھیں، جنہیں دیکھ کر بدقسمت لڑکی اس قدر پریشان ہوئی کہ اپنی جان لینے کا فیصلہ کرلیا۔ خوش قسمتی سے اس کی جان بچ گئی ہے لیکن وہ تاحال ہسپتال میں زیر علاج ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ وہ شدید صدمے میں مبتلا ہے اور اسے طویل عرصے تک نفسیاتی علاج کی ضرورت ہوگی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی