ریمنڈ ڈیوس اور شکیل آفریدی کے بدلے عافیہ صدیقی کی رہائی کی کوئی بات نہیں ہوئی،کوشش ہے افغانستان میں امن ہو:شاہ محمود قریشی

ریمنڈ ڈیوس اور شکیل آفریدی کے بدلے عافیہ صدیقی کی رہائی کی کوئی بات نہیں ...
ریمنڈ ڈیوس اور شکیل آفریدی کے بدلے عافیہ صدیقی کی رہائی کی کوئی بات نہیں ہوئی،کوشش ہے افغانستان میں امن ہو:شاہ محمود قریشی

  

ملتان(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ریمنڈ ڈیوس اور شکیل آفریدی کے بدلے عافیہ صدیقی کی رہائی کی کوئی بات نہیں ہوئی تاہم میری خواہش ہے کہ  پاکستانی قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ اپنے گھر پہنچ جائے، گورنر پنجاب چوہدری سرور سے متعلق ویڈیو کے حوالے سے بے خبر ہوں، پرویز الہیٰ اور جہانگیر ترین کی گفتگو نہیں سنی، جو بات انہیں معلوم ہی نہیں وہ اس پر کیسے بات کریں؟۔

نجی ٹی وی کے مطابق ملتان میں میڈیا سے گفتگو  کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ حکومت کی امریکی حکام سے بات چیت چل رہی ہے کہ ڈاکٹر عافیہ کو پاکستان کے حوالے کر دیا جائے، عافیہ صدیقی کی بقیہ سزا اگر یہاں پوری ہو تو ان کی فیملی کو سہولت مل جائے گی،ریمنڈ ڈیوس اور شکیل آفریدی کی رہائی کے بدلے عافیہ صدیقی کی رہائی کی کوئی بات نہیں ہوئی تاہم میری خواہش ہے کہ  پاکستانی قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ اپنے گھر پہنچ جائے، سفارتی سطح پر عافیہ صدیقی کو لانے کیلئے جو کرسکتے ہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی سیاستدان پاکستان کو نشانہ بناکر الیکشن جیتنا چاہتے ہیں،مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فائرنگ کی مذمت کرتے ہیں،ایل او سی پر بھارتی فائرنگ مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کی مذموم کوشش ہے، بھارت کی سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیاں جاری ہیں ،مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کو لوگ اچھی طرح جانتے ہیں،بھارت بلا اشتعال فائرنگ بند کرے۔انہوں نےخطے میں امن و امان کے حوالے سے کہا  کہ امریکہ کے کہنے پر پاکستان  نے امن کے لیے تعاون کیا ہے اور ابھی بھی کوشش کر رہے ہیں کہ خطے کی دیگر قوتوں کو ساتھ ملائیں،روس بھی خطے کا ایک اہم ملک ہے، روس کو بھی امن مذاکرات میں شامل کرنا چاہتے ہیں،سب کو مل کر خطے کی ترقی کے لیے سوچنا ہو گا، خواہش اور کوشش ہے افغانستان میں امن ہو۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی اورمسلم لیگ ن سے گزارش کی کہ وہ ذات سے ہٹ کر خطے کا سوچیں، شریف خاندان پر موحودہ حکومت کے اقتدار میں آنے سے پہلے کیس بنے اور نیب اور عدلیہ آزاد ہیں،نیب کے مقدمات میں انکوائریوں سے تحریک انصاف کا کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی حکومت ان پراثرانداز نہیں ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پیٹرول کی قیمت تب نیچے آئے گی جب خطے کے حالات بہتر ہوں گے، جب پاکستان کی برآمدات بہتر ہوں گی تب ڈالر کے ریزرو میں اضافہ ہوگا اور جیسے جیسے پاکستان کا ریزرو بڑھے گا ڈالر کی قیمت بھی کم ہو گی، ایران کی پٹرولیم ایکسپورٹ متاثر ہو گی تو قیمتیں بھی متاثر ہوں گی۔

مزید : اہم خبریں /قومی