ترک کارروائیوں کے سبب 30ہزار شہری نقل مکانی پر مجبور ہوئے:ایس ڈی ایف

ترک کارروائیوں کے سبب 30ہزار شہری نقل مکانی پر مجبور ہوئے:ایس ڈی ایف

  



دمشق(این این آئی)سیرین ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف)نے کہاہے کہ فائر بندی کے معاہدے کے بعد ترکی نے 1100 مربع کلو میٹر اراضی پر قبضہ کیا، ہمارے 182 جنگجوں کو ہلاک اور 243 کو زخمی کیا اور ترکی کے سبب 30 ہزار شہریوں نے اپنے علاقوں سے نقل مکانی کی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایس ڈی ایف کی جنرل کمان کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ ترکی فائر بندی کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ وہ دانستہ اور سوچے سمجھے انداز میں انسانی المیے کے حجم کو بڑھا رہا ہے۔بیان کے مطابق ترکی کی فوج اور اس کے زیر انتظام مسلح گروپوں کی جانب سے فائر بندی کے معاہدے کی پاسداری نہیں کی جا رہی... یہ معاہدہ ایس ڈی ایف کی مشاورت سے 17 اکتوبر کو ترکی اور امریکا کے درمیان طے پایا تھا۔ ہماری فورسز مذکورہ سمجھوتے کے متن میں موجود تمام(بقیہ نمبر43صفحہ12پر)

 شقوں کی پاسداری کر رہی ہیں۔ایس ڈی ایف کے بیان میں واضح کیا گیا کہ فائر بندی کے دن سے اب تک ترکی نے تقریبا 11 ہزار مربع کلو میٹر کا جغرافیائی رقبہ اپنے قبضے میں لیا جس میں 56 دیہات شامل ہیں۔ اس کے علاوہ عین عیسی کے شمال، کوبانی کے مشرق، راس العین کے مشرق اور تل تمر کے شمال مغرب میں متعدد کھیتوں پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا گیا۔ فائر بندی کے بعد سے ترکی اور اس کے زیر انتظام مسلح گروپوں کی جانب سے مسلسل خلاف ورزیوں کا ارتکاب جاری ہے۔ اس کے نتیجے میں 30 ہزار کے قریب شہری نقل مکانی پر مجبور ہوئے جب کہ درجنوں جاں بحق اور زخمی ہو گئے۔بیان کے مطابق ترکی اور اس کے ہمنوا مسلح گروپوں نے فائر بندی کے بعد 108 زمینی حملے کیے۔ اسی طرح ترکی کے ڈرون طیاروں نے 82 ٹھکانوں کو بم باری کا نشانہ بنایا اور اس کی بھاری توپوں نے عسکری کارروائیوں کے متفقہ زون کے باہر 110 ٹھکانوں پر گولہ باری کی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...