پر امن احتجاج ہر شہری کا آئینی اور قانونی حق ہے:نیک محمد خان

پر امن احتجاج ہر شہری کا آئینی اور قانونی حق ہے:نیک محمد خان

  



بٹ خیلہ(بیورورپورٹ)  پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری حاجی نیک محمد خان نے کہا ہے کہ پُر آمن احتجاج کرنا ہر شہری کاآئینی حق او ر قانونی حق ہے مگر احتجاج کے نام پر کسی کو اداروں کے ساکھ اور قومی املاک کونقصان پہنچانے کی اجازت نہیں۔ پاکستان تحریک انصاف حقیقی جمہوری روایات پر پورا یقین رکھتی ہے اس لئے موجودہ مارچ کو اسلام آباد جانے کی راہ میں کسی قسم کی رکاوٹ کھڑی نہیں کی گئی حالانکہ جب 2014میں عمران خان انتخابی دھاندلی کے خلاف پُر آمن احتجاج کررہا تھا تو احتجاج کے شرکاء پر آنسو گیس، شیلنگ اور یہاں تک کہ اُس وقت کے حکمرانوں نے گولیاں چلانے سے بھی گریز نہیں کیا تھا۔ اپنے حجرے میں میڈیا کیساتھ بات چیت  اور کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے حاجی نیک محمد خان نے کہا کہ کروڑوں لوگوں کے ووٹوں سے منتخب ہونے والے وزیر اعظم عمران خان سے بغیر کوئی وجہ بتائے استعفیٰ طلب کرنا کہاں کا انصاف اور قانون ہے؟اور استعفیٰ مانگنے کی کیا جواز بنتی ہے؟ انہوں نے کہا کہ پورے دھرنے اور مارچ کے دوران کوئی بھی عمران خان پر کرپشن یا لوٹ مار کا الزام تک نہیں لگا سکتا جو کہ عمران خان کے آمین و صادق ہونے کا ثبوت ہے۔ حاجی نیک محمد خان نے سابق اُمیدوار صوبائی اسمبلی یاسر خان ایڈوکیٹ کے ہمراہ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام سیاسی شعبدہ بازوں سے بخوبی واقف ہیں اور کسی صورت ان کے ڈرامہ بازی میں نہیں آئینگے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں ملک نئے انتخابات اور آخراجات کا متحمل نہیں ہوسکتا کیونکہ ملک کو اندرونی اور بیرونی طور پر سخت چیلنجز کا سامنا ہے جس سے نکلنے کے لئے پاکستان کو عمران خان جیسے قیادت اور وزیر اعظم کی آشد ضرورت ہے۔  

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...