جیکب آباد میں اجتماعی زیادتی کا شکار 13 سالہ بچی حاملہ ہوگئی لیکن جب ہسپتال گئی تو اس کیساتھ کیا سلوک کیا گیا؟ انتہائی دردناک خبرآگئی

جیکب آباد میں اجتماعی زیادتی کا شکار 13 سالہ بچی حاملہ ہوگئی لیکن جب ہسپتال ...
جیکب آباد میں اجتماعی زیادتی کا شکار 13 سالہ بچی حاملہ ہوگئی لیکن جب ہسپتال گئی تو اس کیساتھ کیا سلوک کیا گیا؟ انتہائی دردناک خبرآگئی

  



جیکب آباد(ویب ڈیسک)جیکب آباد میں اجتماعی زیادتی کا شکار13سالہ بچی کی زچگی سے جمس اور سول ہسپتال انتظامیہ کا انکار، لاڑکانہ ریفر، پولیس کی نگرانی میں متاثرہ بچی لاڑکانہ اسپتال میں داخل۔

تفصیلات کے مطابق جیکب آباد کی سول لائن تھانہ کی حدود کامورا لائن محلہ کی رہائشی اجتماعی ذیادتی کا شکار 13سالہ بچی ارم ابڑو کو اس کی والدہ ضمیراں ابڑو زچگی کے لیے جمس ہسپتال لے کر گئے تو جمس ہسپتال کی انتظامیہ نے بچی کی زچگی سے انکار کرتے ہوئے اسے سول ہسپتال جیکب آباد بھیجا جہاں بھی بچی کی زچگی کے لیے یہ کہہ کر انکار کیا گیا کہ یہاں ماہرگائناکالوجسٹ نہیں ہے جس کے بعد بچی کو لاڑکانہ ریفر کیا گیا جس پرمتاثرہ بچی کی والدہ نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان بااثر ہیں اس لیے جیکب آباد میں میری بچی کی زچگی نہیں کی جارہی جس سے میری معصوم بچی کی زندگی داﺅ پر لگی ہوئی ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /جیکب آباد


loading...