پری  حج کانفرنس2024، مدینہ منورہ کا اعلامیہ

      پری  حج کانفرنس2024، مدینہ منورہ کا اعلامیہ
      پری  حج کانفرنس2024، مدینہ منورہ کا اعلامیہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مکہ مکرمہ میں موجودگی کے دوران3نومبر کو میں نے حج پالیسی 2024ء پر ہوپ کے تحفظات کے عنوان سے کالم لکھا، جن کی آواز بننے کی کوشش ان کے پاس تو شاید کالم پڑھنے کا وقت بھی نہیں ہے البتہ مکہ مکرمہ میں مجھے سعودی کمپنیوں کے بعض ذمہ داران سے ملاقات کا موقع ملا تو مجھے اندازہ ہوا کراچی میں سعودی وزارت الحج کے زیر اہتمام ہونے والے کراچی روڈ شو کے موقع پر پاکستان کی پرائیویٹ سکیم کی کمپنیوں کی تعداد904 سے کم کر کے46 کرنے کا جو طوفان اُٹھا تھا اُس کو ہمارے ہوپ کے سابق اور موجودہ ذمہ داران نے جس انداز میں سعودی ٹورازم اتھارٹی کے ساتھ بعض پاکستانی کمپنیوں کے معاہدے کو جوڑا اور پھر واٹس اپ پر الزامات کی بھرمار کی اُسی لابی نے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ حج مشن کے ذمہ داران کو حقائق کے منافی قصے سنا کر یقین دہانی کروانے کی کوشش کی۔ حج2023ء میں سعودی شرکہ سے پاکستانی کمپنیوں بالخصوص لاہور کے افراد نے سودے بازی اور ریال وصول کئے، حج مشن کے ذمہ داران سے ہوپ کے عہدیداروں کی طرف سے پھیلائی گئی گمراہ کن مہم پر سر پکڑنے پر مجبور ہو گیا،ضیوف الرحمن کی خدمت کرنے والا کردار نظر آنا چاہئے۔ سعودی حکام سے ملاقاتوں میں انکشاف ہوا ہے حج آرگنائزر کی تعداد کم کرنے کا منصوبہ پاکستان تک محدود نہیں ہے، یونیفام پالیسی ہے سب ممالک کو دی جا رہی ہے پاکستانی وزارت الحج کے خوش ہونے والے اہلکاروں کے لئے بھی اچھی خبر نہیں ہے۔سعودی وزارت مرحلہ وار پاکستان سمیت تمام ممالک کی گورنمنٹ سکیم(حج مشن)کا کوٹہ بھی ختم کر کے کمپنیوں کو دینے کا پلان رکھتی ہے اب جبکہ ہوپ کے ذمہ داران کو سعودیہ میں سعودی حکام کی مختلف ممالک کے حج مشن سے ملاقاتوں کے بعد تصدیق ہو گئی ہے کہ حج آرگنائزر کم کرنے کی پالیسی پاکستان تک محدود نہیں ہے،یہ پاکستانی کسی کمپنی یا گروپ کے ڈائریکٹر کی سازش بھی نہیں ہے تو گھٹیا الزامات لگانے والوں کو معافی مانگنا چاہئے۔پاکستان کی طرح سعودیہ میں بھی پاکستانیوں کا ایک ہی سوال ہے حج آرگنائزر کی تعداد904 سے46 ہو گی تو کیا ہو گا اِس سال عملدرآمد ہو گا یا نہیں،ان کے لئے مدینہ منورہ میں موجودگی میں جواب ہے۔ سعودیہ کی پالیسی تمام ممالک کے لئے یکساں ہے موخر ہوا تو سب کے لئے ہو گا عملدرآمد اِس سال ہونا ہے سب پر ہو گا۔مدینہ منورہ میں مجھے عرصے بعد ڈائریکٹر حج مکہ فہیم خان آفریدی، ڈائریکٹر مدینہ منورہ ضیاء الرحمن اور مدینہ منورہ حج مشن کی جان ڈپٹی ڈائریکٹر مدینہ ضیغم نواز سے مندی کی دعوت کے موقع پر طویل نشست اور سوال و جواب کا موقع ملا۔پاکستان حج مشن کے ڈائریکٹر اور ڈپٹی ڈائریکٹر کے پرائیویٹ سکیم کے لئے جذبات سن کر راقم کی اپنی بھی بہت سی غلط فہمیاں دور ہو گئیں۔ ڈائریکٹر  فہیم خان آفریدی اور ضیاء الرحمن ڈائریکٹر مدینہ کا کہنا تھا سعودی حکام سے جب ہم ملتے ہیں  تو وہ ہم سے پاکستان کے مکمل کوٹہ ایک لاکھ79ہزار کی بابت سوال کرتے ہیں۔ہوپ والے ہمیں 90ہزار تک محدود کر دیتے ہیں ڈائریکٹرز کا کہنا تھا کہ ہوپ کو بارہا کہا ہے ہوپ کا دفتر مستقل بنیادوں پر سعودیہ میں بنائیں آپ50فیصد کے سٹیک ہولڈر ہیں، برابری کی سطح پر قائم کر کے دکھائیں ٹیم ورک کریں ہم سے کیا تقاضے ہیں ہمیں بتائیں ہمارے لئے پاکستانی حجاج یکساں اور اہم ہیں۔

سروس سٹیکر اور ہوپ کو کم افراد کے لئے ویزے دینے کا جواب بھی بڑا خوبصورت تھا ہوپ نے کب ہمیں لائحہ عمل (منصوبہ) دیا اور منصوبہ بنایا اور ہم نے تعاون نہیں کیا۔ مجھے ڈائریکٹرز کی دو ٹوک گفتگو سن کر اندازہ ہوا ہماری سائیڈ پر گڑ بڑ ہے۔مرکزی چیئرمین ہوپ جمال خان ترہ کئی بڑے لکی اور خوش قسمت ہیں انہیں ثناء اللہ خان جیسا سینئر وائس چیئرمین ملا ہے جس نے ڈیڑھ ماہ تک ٹیم کے ساتھ حکمت و دانش سے کام کیا ہے اور اُمید ہے برف پگھل رہی ہے ڈپٹی منسٹر کا سعودیہ بلانا مثبت اثرات مرتب ہونا شروع ہو رہے ہیں، نازک حالات میں خود احتسابی اور اللہ سے معافی مانگنے کی ضرورت ہے۔ اللہ نے کام لینا ہے راستے بھی وہی نکالے گا آگے بڑھنے کے لئے ضروری ہے متحد رہا جائے مشاورت کے عمل میں برکت ہے۔اللہ فہیم خان آفریدی، ضیاء الرحمن اور ضیغم نواز کے عزائم میں برکت دے اسی نشست میں ہر دم بیدار ڈپٹی ڈائریکٹر مدینہ منورہ ضیغم نواز نے اپنے ڈائریکٹر مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کی موجودگی میں مجھے اگلے روز حج2024ء کی تیاریوں اور سرکاری سکیم کی عمارتوں کے حصول اور کھانے کی فراہمی کے لئے کراؤن پلازہ مدینہ منورہ میں ہونے والی پری حج کانفرنس 2024ء میں شرکت کی دعوت دی اور بتایا ڈی جی عبدالوہاب سومرو صاحب بھی تشریف لائیں گے۔مدینہ ہوٹلز اور کیٹرنگ کمپنیوں کے مالکان کو حج2024ء کے حوالے سے ڈی جی حج بریفنگ دیں گے اور ملٹی میڈیا کے ذریعے20 نومبر کو کھلنے والے ٹینڈر پر بریفنگ دیں گے حسب حکم پانچ نومبر کو حرم میں نمازِ عصر کی ادائیگی کے بعد صاحبزادے منیب اشفاق کے ہمراہ کراؤن پلازہ پہنچ گیا، خوبصورت ہال میں خوبصورت انداز میں حج کانفرنس کے انتظامات دیکھ کر دِل خوش ہو گیا۔اس کا اظہار مدینہ منورہ کے ڈائریکٹر ضیاء الرحمن، ڈپٹی ڈائریکٹر ضیغم نواز، ڈائریکٹر مکہ مکرمہ فہیم خان آفریدی سے بالمثافہ گلے مل کر بھی کیا۔راقم کو گزشتہ20سال سے زائد عرصہ سے حج و عمرہ کی بیٹ کرتے گزرا ہے۔2005ء سے اب تک کے ذمہ داران اور ان کی کارکردگی سے آگاہ رہا ہوں اس لئے مجھے ڈی جی صاحب سے ملنے اور عمارتوں کے حصول اور کیٹرنگ کمپنیوں سے کھانے کے حصول کے لئے پیش کیے جانے والے لائحہ عمل کو سننے کا شوق تھا سوا چار بجے ڈی جی عبدالوہاب سومرو صاحب کی آمد کے ساتھ ہی ہال مہمانوں سے بھر چکا تھا ڈپٹی ڈائریکٹر مدینہ منورہ ضیغم نواز نے مائیک سنبھالتے ہوئے مہمانوں کا خوبصورت انداز میں شکریہ ادا کیا اور تلاوتِ کلام پاک کے بعد صدر مجلس ڈائریکٹر جنرل عبدالوہاب سومرو کو خطاب کی دعوت دی۔ڈی جی صاحب نے انتہائی اعتماد کے ساتھ آغاز کرتے  ہوئے کہا ہماری نیت ٹھیک ہے اعمال کا دارومدار نیتوں پر ہوتا ہے۔گزشتہ سال جنہوں نے ساتھ کام کیا طے شدہ کمٹمنٹ پوری کی وہ ہماری آئندہ تین سال کے لئے بھی ترجیح ہوں گے۔ ہم نے مکہ مکرمہ کے بعد آج مدینہ منورہ میں ہوٹلز اور کیٹرنگ کمپنیوں کے مالکان سے براہ راست ملاقات کر کے اور ان کے سوالات اور جوابات دے کر ایجنٹس اور کمیشن مافیا کا کھاتہ صاف کر دیا ہے ہم نے اچھے ہوٹلز آپ کے تعاون سے حاصل کر کے حج2023ء میں 15ارب روپے بچائے اور حاجیوں کو واپس کئے اس سال بھی آپ سے تعاون کا طلب گار ہوں۔

 جنوری میں ہونے والی عالمی حج کانفرنس سے پہلے عمارتوں کا حصول مکمل کر کے ایئر لائنز کا شیڈول فائنل کرنا چاہتا ہوں۔سرکاری سکیم میں حج2024ء میں شارٹ حج بھی متعارف کرا رہے ہیں اس لئے ان کو مدینہ میں تین سے پانچ دن کا سٹے دیں گے۔پاکستان حج مشن کے آپ کے سامنے موجود ڈائریکٹرز اور ڈپٹی ڈائریکٹر سے رابطہ کیا جا سکے گا، درمیان میں کوئی نہیں ہے24گھنٹے رہنمائی تجاویز دے سکتے ہیں، ہمارا کوئی ایجنٹ یا نمائندہ نہیں ہے۔

ڈائریکٹر مدینہ منورہ ضیاء الرحمن نے ملٹی میڈیا پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہم نے ٹینڈر کے لئے فارم سادہ اور مختصر بنا دیا ہے، سارا نظام شفاف بنانے کے لئے آپ لوگ ہوٹل کا نام، سٹار، لوکیشن، لیفٹس، فل بورڈ،کھانے کی فراہمی کے ساتھ فطرہ وائز تفصیل فراہم کریں ڈائریکٹر مکہ فہیم خان آفریدی نے خطاب میں کہا ہماری خواہش ہے سرکاری حج سکیم کے شارٹ حج کے علاوہ40روزہ حاجی جو مدینہ میں آٹھ دن کی بجائے چار دن رہنا چاہے ان کو مرکزیہ میں جگہ دیں سارا نظام شفاف بنا دیا ہے،کوئی اہلکار بھی آپ کی مدد نہیں کر سکے گا۔ ڈی جی نے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا تازہ روٹی کی فراہمی یقینی بنائیں گے، دال زیادہ شامل کیے جانے کا توڑ کرتے ہوئے مینو میں گوشت زیادہ کر دیا ہے حج کانفرنس کا اعلامیہ یہی ہے۔20نومبر تک مکمل فارم پُر کر کے رجسٹرڈ ڈاک کے ذریعے یا آن لائن بھجیں،20نومبر کو تین بجے سب کے سامنے ٹینڈر کھولیں گے انڈر ہینڈ ڈیل کمیشن کی روایت گزشتہ سال سے ہمیشہ کے لئے دفن کر دی ہے۔فارم مکمل پُر کریں گے۔ حج 2024ء کے لئے مکاتب بھی اچھے لیں گے اس کے لئے شرکہ جات کی تشکیل ِ نو جاری ہے۔گزشتہ سال سے بھی بہتر عمارتوں کا حصول ٹارگٹ ہے کوالٹی پر کوئی کمپرومائز نہیں ہو گا۔ضیوف الرحمن کی رہنمائی اور خدمت کے عظیم مشن کو پاکستان حج مشن آپ کے تعاون سے یقینی بنائے گا۔حج کانفرنس کے کامیاب انعقاد سے اندازہ ہوا ڈی جی اور ان کی ٹیم لانگ ٹرم پالیسی کی طرف مضبوط انداز میں آگے بڑھ رہی ہے،50فیصد کے سٹیک ہولڈر پرائیویٹ سکیم کے نمائندہ ہوپ کو بھی بلاتاخیر لانگ ٹرم منصوبہ وزارت مذہبی امور اور حج مشن کے سامنے رکھنا ہو گا۔ڈی جی عبدالوہاب سومرو سے ملاقات میں ان کا عزم دیکھ کر اندازہ ہوا حج ٹریڈ محفوظ ہاتھوں میں ہے ان کا سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے حجاج تمام پاکستانی حجاج میں قابل ِ فخر اعلامیہ ہے۔

٭٭٭٭٭

مزید :

رائے -کالم -