دھرنوں میں نعرے لگوا کر کسی کو گھر نہیں بھیجا جاسکتا، رانا ثناء اللّٰہ

دھرنوں میں نعرے لگوا کر کسی کو گھر نہیں بھیجا جاسکتا، رانا ثناء اللّٰہ

فیصل آباد(بیورورپورٹ)سابق صوبائی وزیر قانون وبلدیات رانا ثناء اللہ خاں نے کہا ہے کہ ہم پاکستان عوامی تحریک کو بطورسیاسی جماعت میدان عمل میں آنے پر خوش آمدید کہتے ہیں اورعلامہ طاہرالقادری کی جمہوری اورآئینی اقدارپرمبنی سیاست کا خیر مقدم کریں گے کیونکہ لشکر کشی،جتھہ بندی اوردھرنوں کی سیاست سے جمہوریت پنپ نہیں سکتی۔انہوں نے یہ بات سرکٹ ہاؤس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ارکان قومی اسمبلی طلال بدرچوہدری،بیگم خالدہ منصور،ارکان صوبائی اسمبلی محمدنواز ملک،شیخ اعجازاحمد،حاجی الیاس انصاری،فقیر حسین ڈوگر،حاجی خالد سعید،رانا شعیب ادریس،نعیم اللہ گل کے علاوہ شاہد محمود بیگ ایڈووکیٹ اور دیگر مسلم لیگی رہنما بھی اس موقع پر موجودتھے۔سابق صوبائی وزیرقانون رانا ثناء اللہ خاں نے کہا کہ دھرنوں میں نعرے لگوا کر کسی کو گھر نہیں بھیجا جاسکتا۔سیاست کو انتشار کاذریعہ نہیں بنانا چاہیے بلکہ سیاسی انداز،جمہوریت اورآئین کے مطابق ہونا چاہیے اورحکومتوں کی تبدیلی آئین کے مطابق ہی آنی چاہیے۔رانا ثناء اللہ خاں نے کہا کہ طاہرالقادری کے ریفارمز ایجنڈے کواگر عوام پذیرائی دیتے ہیں تو کسی کو اعتراض نہیں ہوگا لیکن منفی ہتھکنڈے اورزبردستی کادستور کسی صورت قبول اورمناسب نہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب نے فیصل آباد کی ضلعی انتظامیہ کو پاکستان عوامی تحریک کے 12اکتوبر کو دھوبی گھاٹ میں ہونے والے جلسے کے لئے فول پروف سیکورٹی فراہم کرنے کی ہدایت جاری کردی ہے تاہم امن وامان کو برقراررکھنے کے لئے عوامی تحریک کوبھی انتظامیہ سے تعاون کرنا چاہیے۔رانا ثناء اللہ خاں نے کہا کہ علامہ طاہر القادری اپنے گرد طالع آزماؤں سے محتاط رہیں کیونکہ ان کے شاید یہ عزائم نہ تھے جس جگہ آج انہیں لاکرکھڑا کردیا گیا۔انہوں نے کہا کہ پرویز الہٰی گزشتہ روز فیصل آباد دورہ کے موقع پر بہت کچھ کہتے رہے،میں ان سے صرف یہ کہوں گا کہ 2008ء میں آپ کی نگران حکومت نے الیکشن کرائے تھے۔اس کے باوجود آپ کوعوام نے ذلت آمیز شکست سے دوچار کیا۔انہوں نے کہا کہ فیصل آباد کے عوام نے آپ کو کبھی قبول نہیں کیا۔آمریت،غیر جمہوری قوتوں کے ساتھ مل کر آپ نے کیاکیا؟۔انہوں نے کہا کہ چوہدری برادران آمرکے کندھوں پر بیٹھ کر اقتدار میں آئے لیکن عوام کے دلوں تک نہ پہنچ سکے پھر انہوں نے طے شدہ سکرپٹ کے ذریعے دھرنوں کے پیچھے انتہائی گھناؤنا اورسازشی کرداراداکیا اور کبھی کہا کہ10ہزارافرادلے کر جائیں استعفیٰ آجائے گا۔یاریڈزون میں داخل ہوجائیں اوربندے مروادیں استعفیٰ آجائے گا پھر بھی ناکام ہوئے تو سرعام کہنا شروع کردیا کہ فوج مداخلت کرے اورپاک فوج کو بھی بدنام کرایا اور سیاست کو پراگندہ کیا۔دوسری طرف راولپنڈی کے ون مین شو کو منہ کی کھانا پڑی۔انہوں نے کہا کہ دنیا نےآئین اور قانون پر چل کر ہی ترقی کی ہے یہی راستہ پاکستان کی ترقی کے لئے ناگزیر ہے۔الیکشن میں دھاندلی کے الزامات کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے سپریم کورٹ کے ججز پر مشتمل کمشن بنانے کا اعلان کردیاہے جس پر دھرنے والے بھی اعتماد کریں۔بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے کئے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے رانا ثناء اللہ خاں نے کہا کہ پنجاب حکومت بلدیاتی الیکشن کرانے کو تیارہے اوربلدیاتی ایکٹ سب سے پہلے پنجاب اسمبلی سے منظور اور8338سیٹوں پر حلقہ بندی کراکر الیکشن کمشن سے رجوع کیا اور کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال ودیگر مرحلہ مکمل کرلیاتھا۔پھر ہائیکورٹ میں دائر درخواست پر بعض حلقہ بندیوں پر اعتراضات سامنے آئے اور اب ایکٹ میں 15،اکتوبر تک ترامیم کرکے الیکشن کمشن کو بھجوادی جائے گی۔

مزید : علاقائی