بد اخلاقی کے ملزم کو پیش نہ کرنے پر ایس پی کی سرزنش خانہ پری نہیں چلنے دینگے،سپریم کورٹ

بد اخلاقی کے ملزم کو پیش نہ کرنے پر ایس پی کی سرزنش خانہ پری نہیں چلنے ...

                       لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے ایک سال قبل مغل پورہ کی کمسن بچی سے بداخلاقی کے ملزم کو مجسٹریٹ کے روبرو پیش نہ کرنے پر ایس پی سی آئی اے عمر ورک کی سرزنش کر ڈالی اور قرار دیا کہ بچی سے زیادتی کے کیس میں خانہ پری نہیں چلنے دیں گے ۔عدالت نے ایک ماہ میں ملزم آصف سے تفتیش مکمل کر کے رپورٹ جمع کرانے کا حکم بھی دے دیا ہے ۔سپریم کورٹ رجسٹری میں مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار اور مسٹر جسٹس شیخ عظمت سعید پر مشتمل دو رکنی بنچ نے کمسن بچی سے زیادتی پر ازخودنوٹس کیس کی سماعت شروع کی تو ایڈووکیٹ جنرل پنجاب حنیف کھٹانہ اور ایس پی سی آئی اے عمر ورک نے رپورٹ جمع کراتے ہوئے کہا کہ ریلوے پولیس سٹیشن نے مغلپورہ کے ایک رہائشی محمد آصف کو گزشتہ ماہ ریلوے سٹیشن سے ایک کمسن بچی کو اغوا کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا ہے، ایس پی سی آئی اے نے کہا کہ ملزم نے دوران تفتیش اعتراف کیا ہے کہ اس نے 12ستمبر2013 کو ایک اور5 سالہ بچی کو مغل پورہ سے اغوا کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا اور گنگارام ہسپتال چھوڑ کر فرار ہو گیا، ملزم نے تھانہ غازی آباد کے علاقے میں بھی ایک بچے کو اغوا کر کے زیادتی کا نشانہ بنانے کا اعتراف کیا ہے، اس پر سپریم کورٹ نے استفسار کیا کہ کیا ملزم کو علاقہ مجسٹریٹ کے روبرو پیش کر کے دفعہ 164کا بیان ریکارڈ کرایا گیا ہے یا نہیں جس پر ایس پی سی آئی اے نے کہا کہ ابھی ملزم جسمانی ریمانڈ پر ہے اور جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے حوالے نہیں کیا گیا جس پر مسٹرجسٹس میاں ثاقب نثار نے ایس پی سی آئی اے کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ تین ہفتے گزرنے کے باوجود ملزم کا علاقہ مجسٹریٹ کے روبرو اعترافی بیان ریکارڈ نہیں کیا گیا، پولیس کے روبرو اعترافی بیان کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے، مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار نے مزید قرار دیا کہ سپریم کورٹ کمسن بچی سے زیادتی کے کیس میں خانہ پری نہیں چلنے دی گی، عدالت خود اس کیس کی نگرانی کر رہی ہے ، پولیس یہ بھول جائے کہ کسی طرح سے یہ کیس دبادیا جائیگا، سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس کیس کی سماعت ایک ماہ تک ملتوی کرتے ہوئے ملزم کو علاقہ مجسٹریٹ کے روبرو پیش کرنے اور تفتیش مکمل کرکے چالان ٹرائل کورٹ میں جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

بد اخلاقی کیس

مزید : صفحہ آخر