فلسطینی اور اسرائیلی خواتین نے مل کر امن کیلئے وہ قدم اٹھالیا جو کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا

فلسطینی اور اسرائیلی خواتین نے مل کر امن کیلئے وہ قدم اٹھالیا جو کوئی سوچ بھی ...
فلسطینی اور اسرائیلی خواتین نے مل کر امن کیلئے وہ قدم اٹھالیا جو کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا

  

یروشلم(مانیٹرنگ ڈیسک) غاصب اسرائیلی فوج کے فلسطینیوں پر مظالم کی خبریں روزانہ کی بنیاد پر آتی رہتی ہے لیکن اب وہاں سے ایک ایسی خبر آ گئی ہے کہ آپ کے لیے یقین کرنا مشکل ہو جائے گا۔ دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق خبر یہ ہے کہ گزشتہ دنوں ہزاروں فلسطینی اور اسرائیلی خواتین مل کرباہر نکل آئیں اور صحرا میں مارچ کیا۔ انہوں نے یہ مارچ دونوں ملکوں کے مابین قیام امن کے مطالبے کے لیے کیا۔ ان تمام خواتین نے سفید لباس پہن رکھا تھا اور اسرائیل و فلسطین تنازعے کے پرامن سیاسی حل کا مطالبہ کر رہی تھیں۔

بچہ بغل میں، الزام پاکستان پر: دیکھیں کیسے افغانستان میں طالبان دندناتے گھوم رہے ہیں، کوئی پوچھنے والا نہیں

ان خواتین کا یہ بھی مطالبہ تھا کہ امن مذاکرات میں خواتین کو بھی برابر کی نمائندگی دی جائے۔اس مارچ کا انعقاد ’ویمن ویج پیس‘ نامی گروپ نے کیا تھا۔ اس گروپ کی بانی میریلین سمدجا کا کہنا تھا کہ ”آج اس مارچ میں دائیں اور بائیں بازو کی، یہودی اور عرب، شہری اور دیہاتی، ہر طرح کی خواتین شامل ہیں اور ہم نے فیصلہ کر لیا ہے کہ اب ہم جنگ نہیں ہونے دیں گی۔“ رپورٹ کے مطابق خواتین کا صحرا میں یہ مارچ 2ہفتے تک جاری رہنے کے بعد گزشتہ روز اختتام پذیر ہوا۔ اس دوران سینکڑوں کم سن بچے بھی ان کے ہمراہ تھے۔ اختتامی روز ان کا ایک بڑا اجتماع ہوا جس میں انہوں نے عربی اور ہیبریو دونوں زبانوں میں لکھے گئے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر”تم پر سلامتی ہو“ تحریر تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -