ضمنی انتخابی مہم، مہذب اور شائستہ رکھی جائے

ضمنی انتخابی مہم، مہذب اور شائستہ رکھی جائے

  



25جولائی کے عام انتخابات کے بعد، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے قیام کو ،چھ ، سات ہفتے ہو گئے ہیں۔ اپوزیشن جماعتوں کی اکثریت نے انتخابی نتائج پر اپنے بعض قومی اور ٹھوس اعتراضات کے باوجود بالخصوص وفاقی اور پنجاب حکومتوں کی تشکیل کو سردست، بادل نخواستہ، اس امید پر تسلیم کر لیا ہے کہ جارحانہ سیاسی کشیدگی اور محاذ آرائی قومی مفاد کے لئے ہرگز درست اور مناسب نہیں، بلکہ نسبتاً بہتر اور مثبت انداز یہ لگتا ہے کہ مذکورہ بالا نئی حکومتوں کو وقتی طور پر اپنے پروگرام اور تیاری کے مطابق کام کرنے دیا جائے، کیونکہ احتجاج اور بدنظمی کی سرگرمیوں سے زیادہ تر قومی اداروں کو ہی نقصان ہوتا ہے، جس کی بنا پر ملکی تعمیر و ترقی کی بجائے موجودہ پالیسیوں اور زیر تکمیل منصوبوں کی پیش رفت، کافی حد تک رک کر التوا کا شکار ہو جاتی ہے جو بلاشبہ مثبت طرز عمل نہیں ہے۔ 14اکتوبر 2018ء کو قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی پچاس کے لگ بھگ کچھ نشستوں پر ضمنی انتخابات کی مہم اب زور پکڑ گئی ہے، جبکہ اس مہم کے دوران بھی مختلف سیاسی رہنماؤں کا حریف امیدوار وں پر تنقید کا بڑا مقصد ان کی حتی المقدور تضحیک اور کردارکشی نہیں ہونا چاہیے

اس کے برعکس اگر کسی نے آئینی اور قانونی طور پر گزشتہ سالوں یا ماضی قریب میں کوئی قابل ذکر مالی بدعنوانی، اپنی ذمہ داریوں سے تجاوز یا غیر قانونی طور پر کسی واضح اقربا پروری کی کارروائی کا ارتکاب کیا ہے تو بلاشبہ ان افراد کے خلاف بلا امتیاز سیاسی وابستگی، فرقہ پرستی اور علاقائی تعلق متعلقہ قوانین کے تحت کارروائی کی جائے۔لیکن ذرائع ابلاغ میں بدتمیزی ، بدزبانی اور چور، ڈاکو، لٹیرے وغیرہ ہونے کی الزام تراشی سے ایسے اطوار، رویے اور اشارے ظاہرنہ کئے جائیں، جن میں محض انتخابی امیدواروں یا نمائندوں کو ہی حرف تنقید بنانے کے عندیے دیئے جائیں ،کیونکہ کرپشن میں تو مختلف شعبہ ء زندگی کے لوگ ملوث ہوتے ہیں۔

دوسری جانب اگر ایسے ہی اشتعال انگیز اور مجرمانہ کارروائیوں میں ارتکاب کے الزامات خود ان غیر شائستہ لب و لہجوں کے استعمال کرنے والے سیاست کاروں پر عائد ہوں تو بھلا وہ اپنی سبکی ہونے پر صبر و تحمل اور قوتِ برداشت کا مظاہرہ بھی کیونکر کریں گے؟ یادرہے کہ سیاسی تنقید میں ابھی اکثر ہم اس سنجیدہ اور منصفانہ کارکردگی کے مقام پر نہیں پہنچے کہ اپنی جماعت یا اتحاد کے لوگوں کے خلاف بھی کوئی تبصرہ سننے کا حوصلہ کر سکیں۔

مزید : رائے /کالم