ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن ملتان ڈویژن میں کروڑوں کی مبینہ کرپشن

ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن ملتان ڈویژن میں کروڑوں کی مبینہ کرپشن

لاہور (ارشد محمود گھمن/سپیشل رپورٹر) ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مو ٹر رجسٹر یشن ملتان ڈویژن 10 کروڑ روپے کی میگا کرپشن کا انکشاف،اس میں ملوث ایک ڈائر یکٹر،2ای ٹی اوز،5انسپکٹرز اور اسسٹنٹ ایکسائز آ فیسراورڈ یٹا انٹری آپر یٹر اپنے عہدوں پر براجمان ہیں جبکہ ان کے خلاف چلنے والی انکوائری اڑھائی سال گزرنے کے بعدبھی ردی کی ٹوکری کی زینت بنی ہوئی ہے ،ان افسروں پرموٹر سائیکل کی پرانی سیریل کے1600نمبرز ٹرکوں کو الاٹ کرنے اور ٹو کن ٹیکس اور دیگر ٹیکسزکی مد میں قو می خزانہ کو کروڑوں کا نقصان پہچانے کا الزام ہے۔مذکورہ افسروں پرپرا نے1600 سیریل نمبرز کی مینو ل ریکارڈ میں مبینہ طو ر پر رد و بدل کر کے جعل سازی طر یقہ سے کروڑوں رو پے کما نے کا الزام تھا ،تفصیلات کے مطا بق ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مو ٹر رجسٹریشن ڈو یژن ملتان نے1960ء سے جاری ہو نے والے مو ٹر سائیکلوں کے پرا نے 1600سیر یل نمبرز مینول ریکارڈ میں مبینہ ردو بدل کرتے ہوے جعل سازی طریقہ سے ٹر کوں کو الاٹ کر دی گئی جس کا انکشا ف آڈٹ رپورٹ 2014-2015ء میں کیاگیاجبکہ مارچ2016ء کی آ ڈٹ رپورٹ میں اس میگا سیکنڈل کیس میں ملوث اس وقت کے ڈائریکٹرجام سراج (موجودہ ڈائریکٹر نارکو ٹیکس ساؤتھ)، ای ٹی اوز فرخ زمان قریشی(ریٹائرڈ)،ملک الطاف اوروقار کیانی اسسٹنٹ ایکسائز آفیسر جبکہ انسپکٹرز جمیل سپرا،اظہر خو رشید،نجم ثا قب،چو ہدری امتیاز،احسان خان اورڈیٹا انٹری اپریٹر کاشف کو ذمہ دار قرا ر دیا گیاتھا ۔ذرائع کے مطابق محکمہ نے ان کے خلاف محکمانہ کار روائی شروع تو کی گئی مگر چند ماہ بعد ہی اسے دا خل دفتر کر کے ان افسران کو بحال کر دیاگیا اور کروڑوں روپے قومی خزانہ کے لو ٹنے والے یہ افسران اب بھی اپنی سیٹوں پر رعب جمائے بیٹھے ہیں تاہم چند ایک ان میں سے ریٹائرڈ بھی ہو چکے ہیں ،انکوائری افسر ڈی جی نارکوٹیکس راجہ زاہدابھی تک اس میں ملوث افسروں کے خلاف اپنی انکورائی کی رپورٹ پرکارروائی مکمل نہیں کرسکے ، ذرائع کے مطابق مبینہ طور پر بااثر افسرں نے مذکورہ ڈی جی کو بھی اپروچ کرلیا ہے جس کی وجہ سے یہ انکوائری سرد خانے کی نظر ہوچکی ہے اور اس میں ملوث افسر اپنی سیٹوں پر براجمان ہیں ،جب اس با بت موقف دریا فت کر نے کے لئے ایڈیشنل ڈی جی ایکسائز مسعود الحق سے را بطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کے انکوائری جاری ہے ،ذمہ داروں کاتعین ہو نے کے بعد ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

کرپشن

مزید : صفحہ آخر