سمندری طوفان سے پاکستان کے ساحلی علاقوں کو خطرہ نہیں،محکمہ موسمیات

سمندری طوفان سے پاکستان کے ساحلی علاقوں کو خطرہ نہیں،محکمہ موسمیات

  



صنعاء /مسقط/کراچی (این این آئی)بحیرہ عرب میں بننے والا سمندری طوفان شدت اختیار کر گیا، سمندری طوفان دو روز میں اومان اور یمن کے ساحلوں سے ٹکرائے گا، تاہم اس طوفان سے پاکستان کے ساحلی علاقوں کو کوئی خطرہ نہیں،میڈیارپورٹس کے مطابق ڈائریکٹر محکمہ موسمیات شاہد عباس نے بتایا کہ سمندری طوفان لوبان کراچی سے 1500کلو میٹر جنوب مغرب میں ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ سمندری طوفان دو روز میں اومان اور یمن کے ساحلوں سے ٹکرائے گا، تاہم اس طوفان سے پاکستان کے ساحلی علاقوں کو کوئی خطرہ نہیں۔ڈائریکٹر محکمہ موسمیات کے مطابق اوڑمارہ، پسنی، گوادر اور کراچی میں سمندری طوفان کے اثرات بادلوں کی صورت میں نظر آسکتے ہیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق سمندری طوفان لوبان کیٹیگری ون کے سائیکلون میں تبدیل ہوگیا ہے جو 7کلومیٹرفی گھنٹہ کی رفتار سے آگے بڑھ رہا ہے۔محکمہ موسمیات نے مزید بتایا کہ طوفان لوبان عمان سے 800کلومیٹر، یمن سے 680کلومیٹر جبکہ بھارتی ساحل گوپال پور سے 510 کلومیٹر دور ہے۔محکمہ موسمیات نے یہ بھی بتایا کہ ڈپریشن 24گھنٹوں میں سائیکلون بن سکتاہے جس کے بعد یہ طوفان لوبان 11 اکتوبر تک بھارتی ساحلی علاقوں سے ٹکرا سکتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر