ڈالر مزید 11روپے 70پیسے مہنگا ، انٹر بینک مارکیٹ میں 136اور اوپن مارکیٹ میں138روپے تک پہنچ گیا ، سٹیٹ بینک کے پاس زرمبادلہ کے ذخائر 14ارب 40کروڑو ڈالر رہ گئے

ڈالر مزید 11روپے 70پیسے مہنگا ، انٹر بینک مارکیٹ میں 136اور اوپن مارکیٹ ...

  



کراچی(سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کی جانب سے انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) سے بیل آؤٹ پیکیج لینے کے فیصلے کے بعد ڈالر کی قیمت ریکارڈ سظح تک پہنچ گئی انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 136 روپے تک پہنچ گیا۔اوپن مارکیٹ میں 9 روپے 50 پیسے اضافے کے ساتھ ڈالر 138 روپے کا ہوگیا۔انٹربینک مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے آغاز سے ہی روپے کی قدر میں یکدم کمی دیکھنے میں آئی اور ڈالر 139روپے تک پہنچ گیا ناہم مارکیٹ بند ہونے کے وقت قیمت میں کچھ کمی آئی مارکیٹ بند ہونے پر قیمت 11 روپے 70 پیسے اضافے کے ساتھ 136 روپے تک جا پہنچی۔ پیر کے روز رمارکیٹ کے اختتام پر انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 124 روپے 30 پیسے تھی جو منگل کو اچانک بڑھ گئی اور ٹریڈنگ کے دوران قیمت 136روپے سے تجاوز کرتے ہوئے بھی دیکھی گئی۔کرنسی ڈیلرز کے مطابق روپے کی قدر میں حالیہ کمی آئی ایم ایف کے دباؤ کا نتیجہ لگتی ہے کیونکہ آئی ایم ایف پہلے ہی روپے کی قدر میں 15 فیصد کمی کا مطالبہ کرچکا ہے۔ڈیلرز کا کہنا ہے کہ ڈالر کی قیمت میں اچانک اضافے سے غیر یقینی صورتحال کا سامنا ہے اور ڈالر کی ڈیمانڈ بڑھنے کا امکان ہے۔انہوں نے بتایا کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت کئی ہفتوں سے انٹر بینک مارکیٹ کے مقابلے میں 4 سے 5 روپے زائد پر ہی ٹریڈ کررہی تھی۔ادھر ایکسچینج کمپنی ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری ظفر پراچہ کے مطابق مارکیٹ میں اتار چڑھاؤ کے باعث اوپن مارکیٹ میں ڈالر کا دستیاب ہونا مشکل ہے اور جب تک انٹربینک مارکیٹ میں استحکام نہیں آتا ڈالر کی دستیابی مشکل ہے۔انہوں نے کہا کہ موجود حکومت سابق حکومت کی پالیسی کو اپنانے سے گزیرکر رہی ہے اور روپے کی قدر میں کمی سے متعلق باقاعدہ اعلان نہیں کر رہی۔دوسری جانب چیئرمین فاریکس ایسوسی ایشن ملک بوستان نے دعویٰ کیا کہ آئی ایم ایف کے مطالبے پر روپے کی قدر کم کی گئی ۔انہوں نے کہا کہ ڈالر کی قدر بڑھنے سیگیس ،بجلی اور پٹرولیم مصنوعات میں خاطر خواہ اضافہ سے مہنگائی کا بڑا طوفان آئے ۔معاشی ماہرین شاہد حسن صدیقی ،ڈاکٹر اکرام الحق اور قیس اسلم نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ابھی تو حکومت آئی ایم ایف جائے گی تو انکی سفارشات اور شرائط کو بھی پورا کرنا ہو گاجسکے بعد ڈالر کی قیمت میں 150روپے سے تک جاسکتی ہے اور روپے کی قدر بھی مزید گرے گی اور تاریخ کی بلند ترین مہنگائی کا طوفان بجلی گیس اور پٹرولیم مصنوعات میں کی مد آئے گا۔دریں اثنا دریں اثنا سٹیٹ بنک آف پاکستان کے مطابق پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر 14 ارب 89 کروڑ ڈالر کی سطح پر آگئے ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 62 کروڑ 83 لاکھ ڈالر کی کمی آئی ہے،مرکزی بینک کے مطابق اسٹیٹ بینک کے پاس موجود ذخائر 62 کروڑ ڈالر کم ہوکر 8 ارب 40 کروڑ ڈالر ہوگئے ہیں جبکہ شیڈول بینکوں کے ذخائر 6 لاکھ ڈالرکم ہوکر 6 ارب 48 کروڑ ڈالر رہ گئے ہیں۔جس کے باعث معاشی بحران عروج پر پہنچ گیا، وزیراعظم عمران خان اور وزیر خزانہ اسد عمر سمیت معاشی ٹیم اس ساری صورتحال سے بے خبر رہی۔ایک اور بدترین معاشی بحران دستک دینے گا، اسٹاک مارکیٹ میں غیریقینی صورتحال، ڈالرکی قدر میں اضافہ اور زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی۔ایک ماہ میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی بے قدری بھی بڑھی اور اوپن مارکیٹ میں امریکی کرنسی نے ریکارڈ چھلانگ لگائی۔ ڈالر کی قدر 5 روپے بڑھی اور قیمت 134 روپے ہوگئی۔ 17 اگست کو وزیراعظم عمران خان کے انتخاب کے دن ڈالر اوپن مارکیٹ میں 122 روپے کا تھا جو اب 14 روپے بڑھ کر 136 روپے کا ہوچکا ہے۔پی ٹی آئی حکومت آتے ہی زرمبادلہ کے ذخائر میں بھی واضح کمی ہوئی، ذرائع کے مطابق سٹیٹ بنک کے پاس موجود زرمبادلہ کے ذخائر صرف دو ماہ کے درآمدی بل کیلئے ہیں،جس کے باعث حکومت آئی ایم ایف سے قرضہ لینا چاہتی ہیڈالر کی اونچی اڑان کا سونے کی قیمت پر بھی اثر ہوا ہے جس کی فی تولہ قیمت 1700 روپے اضافے کے بعد 62 ہزار روپے ہوگئی ہے۔10 گرام سونا 1454 روپے اضافے کے بعد 53 ہزار 155 روپے کا ہوگیا ہے، دوسری طرف سٹیٹ بینک آف پاکستان نے انٹرابینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں اضافے کی وجہ عالمی ادائیگیوں کو قرار دیدیا ہے اور کہا ہے کہ ناخوشگوار اتار چڑھاؤ کی صورت میں مداخلت کیلئے تیار ہیں۔ سٹیٹ بینک کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ انٹرابینک میں ڈالر 136 روپے 64 پیسے کا ہو گیا ہے اور اس کی وجہ عالمی ادائیگیوں کے باعث روپے کی قدر میں ہونے والی کمی ہے۔ سٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ خام تیل کی بڑھتی قیمت امپورٹ بل میں اضافے کی وجہ بن رہی ہے جبکہ امپورٹ بل کی ادائیگیوں کے باعث روپیہ دباؤ کا شکار ہے جس کے باعث ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔ سٹیٹ بینک نے مزید کہا ہے کہ وہ صورتحال کی مسلسل کڑی نگرانی میں مصروف ہیں اور ناخوشگوار اتار چڑھاؤ کی صورت میں مداخلت کیلئے بھی تیار ہیں۔

ڈالر مہنگا

مزید : صفحہ اول