محکمہ صحت کے گزشتہ 10کے اخراجات کے سپیشل آڈٹ کا فیصلہ

محکمہ صحت کے گزشتہ 10کے اخراجات کے سپیشل آڈٹ کا فیصلہ

  



لاہور(جاوید اقبال) محکمہ صحت نے گزشتہ دس سالوں سے اخراجات کا سپیشل آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے فیصلہ وزیر اعظم پاکستان کے احکامات کی روشنی میں کیا گیا ہے سپیشل آڈٹ محکمہ صحت کے دونوں شعبہ جات کے ذریعے مکمل کئے گئے جن کا پروجیکٹس مشینری آلات، میڈیکل سرجیکل کے ساز و سامان کا سپیشل آڈٹ ہو گا آڈٹ تھرڈ پارٹی کرے گی تاہم نگرانی سپیشل آڈٹ ونگ کرے گا ۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ادویات مشینری آلات کی زیادہ تر خریداری محکمہ صحت کے پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ نے کی ڈسٹرکٹ ہسپتالوں سے مہنگے ترین پروجیکٹس اپ گریڈیشن آف ڈی ایچ کیوز اور سٹی ایچ کیوز کا بھی آڈٹ ہو گا سابق حکومت کے آخری چند ماہ میں فرنس کے 5ارب روپے سے ٹیچنگ ہسپتالوں میں مکمل لیور کلینکس کا بھی آڈٹ ہو گا اس فیصلے سے میڈیکل یونیورسٹیوں میڈیکل کالجز ہسپتالوں کی انتظامیہ میں ہلچل مچ گئی ہے اور انہوں نے خریداری کا ریکارڈ درست کرنا شروع کر دیا ہے محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا ہے کہ محکمہ صحت کی طرف سے گزشتہ 10سالوں میں مکمل کئے گئے مختلف اربوں روپے کے منصوبہ جات میں دیئے گئے ٹھیکہ جات میں بڑے پیمانے پر ہیرا پھیری پائی گئی ہے ایسے پروجیکٹس جو وقت پر مکمل نہ ہوئے ان پر اربوں روپے اضافی لاگت آئی ادویات اور دیگر سا ز وسامان کے ٹھیکہ جات من سند کمپنیوں کو دیئے گئے ان اطلاعات پر حکومت نے ان کا سپیشل آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا ہے ذرائع نے بتایا ہے کہ مہنگے ترین موبائل ہیلتھ یونٹ کی خریداری کے ٹھیکہ جات کا بھی آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے اس حوالے سے محکمہ صحت کی وزیر ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ وزیر عاظم نے تمام محکموں میں خریداری اور اخراجات کا دس سالہ آڈٹ کا حکم دیا ہے جس پر پنجاب حکومت اور محکمہ صحت ہر حال میں عمل درآمد کرائے گا۔

مزید : صفحہ اول