پرویز مشرف دور کے نیب سمیت تمام کالے قوانین ختم ہونے چاہئیں ، نواز شریف

پرویز مشرف دور کے نیب سمیت تمام کالے قوانین ختم ہونے چاہئیں ، نواز شریف

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی )مسلم لیگ (ن) کے قائد وسابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا ہے کہ نیب سمیت پرویز مشرف دور کے تمام کالے قوانین ختم ہونے چاہئیں، حکومت انتقامی سیاست کر رہی ہے جبکہ ہماری حکومت نے کوئی سیاسی انتقامی کارروائی نہیں کی تھی،وزیراعظم اور وزرا ء کہہ رہے ہیں 50لوگ مزید گرفتار ہوں گے انہیں یہ باتیں کون بتا رہا ہے، نیب میں سلمان شہباز کو بلانے سے بڑا مذاق کیا ہوگا، فواد حسن فواد کے وعدہ معاف گواہ بننے کی بات معلوم نہیں، دن رات کام کرنے پر شہباز شریف کو کینسر کا مرض لاحق ہوگیا ،جس کمپنی کو شہبازشریف نے ٹھیکہ نہیں دیا خیبر پختونخوا حکومت نے دے دیا، نیب تحقیقات کرے خیبر پختونخوا حکومت نے بلیک لسٹ کمپنی کو ٹھیکہ کیوں دیا ؟ ایسے کاموں پر تو ریفرنس دائر ہونا چاہئے ، ملک آگے بڑھانے کیلئے در گزر سے کام لینا ہوگا، یہ ملک پہلے ہی بیٹھ چکا ہے، ایسا ہوتا رہا تو اور بیٹھ جائے گا اور نظام درست ہونے میں وقت لگے گا۔ احتساب عدالت میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو میں سابق وزیراعظم نواز شریف نے حکومت اور نیب پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آمدن سے زائد اثاثوں کے الزام پر کوئی بھی پاکستانی نہیں بچ سکتا، امیر ہو یا غریب، جائیداد بیچنے پر مکمل آمدن ظاہر نہیں کرتا، حکومت انتقامی سیاست کر رہی ہے، ہم نے درگزر کرنے کی اچھی روایات ڈالیں، ہماری حکومت نے کوئی سیاسی انتقامی کارروائی نہیں کی تاہم اگر اس کو احتساب کہتے ہیں تو بہت افسوس ہے۔صحافی کی جانب سے سوال پر کہ ڈالر 136 کا ہوگیا ہے، نواز شریف نے کہا کہ اب سب کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں، پہلے بھی بتایا تھا میں ابھی کسی اور کیفیت میں ہوں،ابھی میرا بات کرنے کا دل نہیں کرتا وقت آنے پر بولوں گا لیکن ابھی نہیں۔نواز شریف نے کہا کہ شہباز شریف نے دیانت داری پر کسی کو انگلی نہیں اٹھانے دی۔سابق وزیراعظم نے کہا کہ پاکستانی اور غیر ملکی شہباز شریف کے کام کی تعریف کرتے ہیں، موجودہ حکومت کے کچھ لوگوں نے شہباز شریف پر الزام لگایا، چینی حکومت کی وضاحت پر شہباز شریف پر الزام لگانے والوں کو منہ کی کھانا پڑی، ایسے لوگوں کے ساتھ ایسا سلوک دکھ کی بات ہے۔

نواز شریف

مزید : صفحہ اول