گرین ایریا مختص کئے بغیر کسی ہاؤسنگ کالونی کی منظوری نہیں دی جائیگی

گرین ایریا مختص کئے بغیر کسی ہاؤسنگ کالونی کی منظوری نہیں دی جائیگی

  



ملتان (نیوز رپورٹر)صوبائی وزیر جنگلات ، ماہی پروری وجنگلی حیات پنجاب محمد سبطین خان نے کہا ہے کہ سابق حکومت کی جنگلات کی افادیت سے عدم دلچسپی اورٹمبر مافیا کی غیر قانونی کارروائیوں نے صوبہ بھر میں ماحولیاتی آلودگی اورسموگ جیسے مسائل سے دوچار کرکے رکھ دیاہے آئندہ ماہ میں سموگ(بقیہ نمبر28صفحہ12پر )

شروع ہونے کاخدشہ ہے جس کامقابلہ شجر کاری اورجنگلات کو مزید توسیع دینے سے کیاجاسکتا ہے بد قسمتی سے ماضی کی حکومت نے ایسے منصوبوں میں دلچسپی لی ہے جس میں سریااورسیمنٹ استعمال ہوتا تھاجبکہ موجودہ حکومت نے گرین پنجاب کے سلوگن کو حقیقت میں بدلنے کاعزم کیاہے اور صوبہ بھر میں پانچ سالوں کے دوران 70کروڑ پودے لگانے کاہدف مقرر کیاگیاہے ان خیالات کااظہار انہوں نے سرکٹ ہاؤس ہیں میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا صوبائی وزیر نے کہاکہ جنگلات لگانے اورشجرکاری سے غفلت کے باعث قوم کو سموگ کاسامناکرناپڑ رہاہے دینا کے دیگرممالک میں 25فیصد جنگلات کیلئے مختص کیاجاتاہے جبکہ پاکستان میں خیبر پختونخواہ 13فیصد سندھ، بلوچستان 4فیصد اورپنجاب 3فیصد جنگلات ہیں پچھلی حکومتوں نے بجٹ میں جنگلات کیلئے 0.3فیصد مختص کیے گئے موجودہ حکومت نے بڑھا کہ ایک فیصد کردیاہے انہوں نے کہاکہ جنگلات کے افسران کو بااختیار کررہی ہے اورفارسٹ آفیسرز کیلئے موٹرسائیکلز فراہم کرنے کی سمری بھیج دی گئی ہے تاکہ ٹمبر مافیا کے خلاف بروقت فوری کارروائی کی جاسکے انہوں نے کہاکہ اینٹوں کے بھٹے ، انڈسٹری کی چمنیوں ، رکشے اورویگنوں سے نکلنے والے زہریلے دھویں کے سد باب کیلئے موثر پلاننگ کی جارہی ہے تاکہ ماحولیاتی آلودگی کو کنٹرول کیاجاسکے اورٹمبر مافیا کیخلاف موثر اقدامات کیلئے باقاعدہ بھٹہ لیگس مقررکیے جارہے ہیں تاکہ مقدمات کاجلدازجلد فیصلہ ہوسکے انہوں نے کہاکہ سموگ سے نچلے اور مستوسط طبقے کے لوگ جوموٹرسائیکل اورسائیکل پرسفرکرتے ہیں زیادہ متاثر ہورہے ہیں اس کے علاوہ آم اورکجھور کے باغات متاثر ہونے کسانوں کو پیداوار میں کمی کاسامنا کرنا پڑ رہاہے حکومت نے ہسپتالوں اورسرکاری دفاتر میں شجرکاری کی خصوصی مہم کا آغاز کردیاہے اس پربھی قانون سازی کررہی ہے کہ گرین ایریا مختص کیے بغیر کسی ہاؤسنگ کالونی کی منظوری نہیں دی جاسکے گی اوراس پر عملدرآمد بھی کروایا جائے گا ۔ علاوہ ازیں سیٹ لائٹ کے ذریعے لگائے گئے پودوں کی مانیٹرنگ کی جائے گی صوبائی وزیر نے کہاکہ ٹمر مافیا پچھلے د س برسوں سے بہت طاقتور ہوچکاہے جدید اسلحہ ودیگروساء سے لیس ان کامقابلہ کرنے کیلئے جنگلات کے افسران وگارڈز کو ہرقسم کے وسائل فراہم کریں گے جبکہ جنگلا ت کی اراضی پرقابض افراد کے خلاف بھی کارروائی کی جائیگی انہوں نے کہاکہ اس وقت 15ہزار ایکڑ پر قبضہ ہے جس میں کچھ رقبہ سرکاری اداروں کے پاس جنگلات کی اراضی کاایک ایک انچ رقبہ واگزار کروائیں گے قبل ازیں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہاکہ محکمہ جنگلات میں صوبہ کے 9ڈویژنوں کی سطح پر کوئیک ریسپانس فورس قائم کی جائے گی جسے ٹمبر مافیا کے خلاف فوری طلب کیاجاسکے گا انہوں نے ہدایت کی کہ پرونشل ہائی وے اورریلوے ٹریک کے ساتھ درخت لگانے کی خصوصی مہم شروع کی جائے انہوں نے کہاکہ محکمہ وائلڈ لائف کی ری سٹریکونگ کی جائے گی تاکہ افسران کی ترقی کے مواقع فراہم کیے جاسکیں اس موقع پر صوبائی وزیر کو بریفنگ دی گئی کہ ساؤتھ فاریسٹ میں5لاکھ ایکڑ پرجنگلات میں جبکہ22ہزار کلو میٹر طویل سڑکوں ،نہروں کے کنارے اورریلوے ٹریک کے ساتھ درخت لگائے گئے ہیں ۔ بعدازاں صوبائی وزیر سبطین خان نے سٹرکٹ ہاؤس ملتان میں فائیکس کا پودابھی لگایا اس موقع پر سابق آئی جی ریلوے ابن حسین نے بھی پود ا لگایا۔

صوبائی وزیر جنگلات

مزید : ملتان صفحہ آخر