سابق صدر ہائی کورٹ بار شیر زمان قریشی پر مسل ح افراد کا حملہ

سابق صدر ہائی کورٹ بار شیر زمان قریشی پر مسل ح افراد کا حملہ

ملتان( خبر نگار خصوصی) سابق صدرہائیکورٹ بارملتان پرضلع کچہری میں حملہ کرنے پروکلاء نے تین ملزموں کوتشددکانشانہ بنانے کے بعدپولیس کے حوالے کردیاجبکہ واقعہ کے خلاف ڈسٹرکٹ بارنے ہڑتال کرنے کے ساتھ ملزموں کی فوری گرفتاری نہیں ہونے پراپنالائحہ عمل تیارکرنیکااعلان (بقیہ نمبر34صفحہ12پر )

کیاہے۔تفصیل کے مطابق سابق صدرہائیکورٹ بارایسوسی ایشن ملتان شیرزمان قریشی کی جانب سے تھانہ کینٹ میں 26 ستمبرکواپنی گاڑی اوررجسٹریشن بک لے جانے جبکہ تھانہ چہلیک میں 6 کروڑ20 لاکھ روپے ادھاردینے کے بدلے بوگس چیک دینے کے دومقدمات درج کرائے تھے جس میں مقامی پراپرٹی ڈیلرزبیرفاروق خان اوران کے بیٹوں طیب بلال خان اورعمرفاروق خان نیدرخواست ضمانت قبل ازگرفتاری دائرکی تھی جس کی ایڈیشنل سیشن جج ملتان حافظ محمدیوسف کی عدالت میں سماعت ہوئی جس میں ملزموں کی جانب سے فیصل مشتاق چوہدری ایڈووکیٹ نے اپناوکالت نامہ پیش کرتے ہوئے مہلت کی استدعاکی جس پر سماعت 13 اکتوبرتک ملتوی کرنیکاحکم دیاگیاجبکہ عدالت سے نکلتے ہی ہنگامہ کھڑاہوگیااورسابق صدراوران کے ساتھیوں نے ان پرحملہ کرنے والے ملزموں عمران،ناصراورایک نامعلوم کوپکڑلیاجن کودیگروکلاء نے اشتعال پھیلنے کے باعث تشددکانشانہ بنانے کے بعدپولیس تھانہ چہلیک کے حوالے کردیا جبکہ واقعہ پرضلع کچہری میں خوف وہراس پھیل گیااوربڑی تعدامیں لوگ موقع پرجمع ہوگئے۔ دریں اثناء واقعہ کے خلاف ڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشن ملتان نے ساڑھے11 بجے دن کے بعدمکمل ہڑتال کردی اوروکلاء مقدمات کی پیروی کے لئے عدالتوں میں پیش نہیں ہوئے ہیں۔اس موقع پرپریس کانفرنس کرتے ہوئے صدرڈسٹرکٹ بارملک محبوب علی سندیلہ نے کہاکہ یہ واقعہ باراورکالے کوٹ پرحملہ ہے اورجرائم پیشہ ملزم پہلے سے مسلح ہوکرپلان کے تحت حملہ کرنے آئے تھے اورواقعہ کے بارے میں سی پی اوملتان کوبھی آگاہ کردیاگیاہے اور12 گھنٹوں میں ملزم گرفتارنہیں ہوئے توباراپنالائحہ عمل تیارکرے گی۔سابق صدرہائیکورٹ بارملتان شیرزمان قریشی نے کہاکہ وہ عدالت میں سما عت پرآئے تو انہیں چیمبرسے اطلاع ملی کہ چندافرادان کے چیمبرکی ویڈیو بنا رہے ہیں جبکہ سماعت کے بعدعدالت سے نکلتے ہی مسلح افرادنے ان پرحملہ کردیاجن کوپکڑکرپولیس کے حوالے کردیاگیاہے اورپولیس سے مطالبہ ہے کہ واقعہ میں ملوث تمام افرادکوگرفتارکرکے کاروائی عمل میں لائی جائے۔جنرل سیکرٹری ملک جاوید اقبال اوجلہ نے کہاکہ جرائم پیشہ افرادکی جانب سے سابق صدربارپرحملہ قابل مذمت ہے اورواقعہ میں ملوث افرادکوفوری طورپرگرفتارکرکیکارروائی کرنے کامطالبہ کرتے ہیں۔ دریں اثناء خان گروپ کے چیئرمین زبیر خان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میں نے شیرزمان کو گروپ کی ملازمت سے برخاست کیا تو میرا اور میری فیملی کا دشمن ہوگیا اور آج کچہری میں میرے بیٹے ایڈووکیٹ طیب بلال پر حملہ کیا ‘ جس میں وہ مشکل سے جان بچا سکا ۔ شیرزمان نے گروپ کو بوگس پروجیکٹ کی منظوریاں لیکر دیں بعد میں انہی دستاویزات کی وجہ سے ہمیں تنگ کرتا رہا ‘ میں 5 سال سے بستر پر ہوں اور سخت بیمار ہوں‘ میری وزیر اعلیٰ پنجاب سے گزارش ہے کہ جوڈیشل کمیشن بنا کر اس معاملے کی انکوائری کرائیں‘اگر مجھے یا میرے بچوں کو کچھ ہوا تو اس کے ذمہ داری انہی عناصرپر ہوگی ۔

Back

مزید : ملتان صفحہ آخر