نئے صوبے کیلئے عملی اقدامات زیرو‘ وسیب سے پھردھوکہ ہوا ہے‘سرائیکی رہنما

نئے صوبے کیلئے عملی اقدامات زیرو‘ وسیب سے پھردھوکہ ہوا ہے‘سرائیکی رہنما

  



ملتان(سٹی رپورٹر ) ملتان میں سرگرم لینڈ مافیا اور جعل سازوں کے خلاف فوجی آپریشن کیا جائے اور انسپکٹر پولیس فہیم بم اور لینڈ مافیا کے تمام گروپوں اور ان کے ساتھیوں کو گرفتار کر کے(بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

اور متاثرین کی جائیدادوں کو قبضہ گروپوں سے آزاد کرا کے متاثرین کے حوالے کیا جائے ۔کیمپ میں مزید دو روزہ اضافہ کرتے ہیںآج اور جمعرات کو بھی بھوک ہڑتال کیمپ لگائیں گے ۔ان خیالات کا اظہار سرائیکستان صوبہ محاذ کے زیر اہتمام ملتان میں لینڈ مافیا کی بڑھتی ہوئی کاروائیوں اور جعلی دستاویزات تیار کرکے قبضہ گروپوں کے خلاف بھوک ہڑتالی کیمپ تیسرے روز نواں شہر چوک ملتان میں لگائے گئے کیمپ میں مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔ مقررین میں سرائیکستان صوبہ محاذ کے چیئر مین خواجہ غلام فرید کوریجہ ،ظہور دھریجہ پاکستان سرائیکی پارٹی کے صدر ملک اللہ نواز وینس ایڈووکیٹ ،جام فیض اللہ ،مہر مظہر کات ،رانا ذیشان نون ،شریف خان لاشاری ،اُجالا لنگاہ ،مختار لنگاہ ،حاجی عید احمد دھریجہ ‘ سید مطلوب بخاری ،عابدہ بخاری ،زبیر دھریجہ ،کاشف دھریجہ ،مختار غوری ،سید اختر گیلانی ،اجمل دھریجہ ،رضوان دھریجہ ،رضوان لاشاری ،راؤ نسیم ،محمد بلال کچھی ،نعیم خان لاشاری ،شفقت رجوانہ ،ندیم لاشاری ،مہر خالد سیال ،ارسلان سیال؛ ،ملک بلال محسن جھنگوی ،امدام مغیری ،غلام فزا بی بی ،اختر شاہ جیلانی ،عامر دھریجہ شامل تھے ۔سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کے بجائے تکلیف دی ہے مایوسیوں کے سائے بڑھتے جارہے ہیں ۔پاکستانی معیشت ڈیفالٹ کے قریب پہنچ چکی ہے آج حالت یہ ہے کہ سٹاک مارکیٹ میں بد ترین مندی سے 238ارب روپے ڈوب گئے آئی ایم ایف سے قرضہ نہ لینے کی بات کرنے والے اس کے آگے کشکول لیے کھڑے ہیں۔ سرائیکی رہنماؤں عامر کوریجہ اور ظہور دھریجہ نے کہا کہ 100دن میں صوبہ بنانے کا وعدہ کیا گیا 60دن گزر گئے ابھی تک صوبے کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا ایسے لگتا ہے کہ وسیب سے دھوکا کیا گیا ہے لیکن ہم دھوکا کرنے والون کو نہیں چھوڑیں گے۔ ہم 100دن کا انتظار کر رہے ہیں جونہی 100دن پورے ہوئے سڑکوں پر ہوں گے احتجاج کریں گے دھرنے دیں گے اور لانگ مارچ کریں گے اور 100دن کے بعد سرائیکستان صوبہ محاذ آئندہ کا لائحہ عمل ترتیب دے گا ۔ہم صوبے کے قیام کے لیے تمام جماعتوں اور ارکان اسمبلی سے ملیں گے اور ضرورت پڑنے پر سرائیکی وسیب کے مقبوضہ اضلاع ٹانک وڈی آئی خان سمیت صوبائی سول نافرمانی کی تحریک بھی شروع کر سکتے ہیں ۔سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ وزیر اعلی عثمان بزدار کو تخت لاہور کا قیدی بنا دیا گیا ہے اسے اتنی اجازت بھی نہیں ہے کہ وہ اپنے گھر تونسہ آسکے وہ بے اختیار وزیر اعلیٰ ہے وہ اپنی تحصیل تونسہ کو ضلع بھی قرار نہیں دے سکتا تو یہ کیسے ممکن ہے کہ وہ سرائیکی صوبہ بنوا دے گا ۔انہوں نے کہا کہ صوبے کے نام پر ہم بہت دھوکا کھا چکے ہیں پیپلز پارٹی اور نون لیگ نے بھی دھوکا اور فراڈ کیا لوگ ان دونوں جماعتوں کے ڈسے ہوئے تھے اس لیے صوبے کے نام پر تحریک انصاف کو ووٹ دیے ہمارا مطالبہ ہے کہ اپنے تحریری وعدے کے مطابق عمران خان 100دن کے اندر صوبہ بنائیں ورنہ ہم اپنا لائحہ عمل دیں گے اور سڑکوں پر دما دم مست قلندر ہو گا ۔انہوں نے مزید کہا کہ وردی میں اگر قبضہ گروپ اور جرائم پیشہ لوگ پیدا ہورہے ہیں تو عوام کا اللہ حافظ سپریم کورٹ اھلیان ملتان کو قبضہ گروپ سے نجات دلائے انسپکٹر فہیم بم کے خلاف اس لیے کاروائی نہیں ہو رہی کہ وہ تو پالیس وردی میں ہے اس کا ناجائز فائدہ اُٹھا کر جرائم کر رہا ہے اگر یہی سلسلہ جاری رہا تو عوام کا پولیس سے اعتماد اٹھ جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر