دیہی مرکز صحت لنگرسرائے میں سہولیات ‘ ادویات کا فقدان ‘ لوٹ مار کا سلسلہ تیز

دیہی مرکز صحت لنگرسرائے میں سہولیات ‘ ادویات کا فقدان ‘ لوٹ مار کا سلسلہ تیز

  



لنگرسرائے(نمائندہ پاکستان)دیہی مرکز صحت لنگر سرائے میں بنیادی سہولیات و ادویات کا فقدان جبکہ رہی سہی کسر عملہ کا غیرانسانی سلوک اور پرچی مافیا ڈسپنسر مدثر نے شہریوں کی جیبیں صاف کرکے پوری کردی ہے متاثرین محمد سلیم،ملک سرفراز،رانا یونس،رانا رضوان،محمد مختار اور راجہ ممتاز کے مطابق (بقیہ نمبر51صفحہ7پر )

دیہی مرکز صحت لنگر سرائے جو خستہ حال بلڈنگ کی وجہ سے کھنڈرات کا منظر پیش کررہا ہے وہاں پر موجود ڈسپنسر مدثر انتہائی غیرانسانی سلوک میں پی ایچ ڈی کرچکا ہے جبکہ مدثر نامی ڈسپنسر بلاخوف ہر آنیوالے مریض سے 50روپے فی پرچی وصول کررہا ہے عدم ادائیگی پر مرکز صحت کے دروازے اس پر بند کردئیے جاتے ہیں عملہ کے اس غیرانسانی رویہ پر مقامی شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ایک طرف کرپٹ مافیا کیخلاف ایکشن لینے کی باتیں کی جارہی ہیں تو دوسری طرف دیہی علاقہ جات میں محکمہ ہیلتھ کا اہلکار عوام کیلئے عذاب بن کررہ گیا ہے انہوں نے محکمہ ہیلتھ کے اعلیٰ افسران سے مطالبہ کیا ہے کہ دیہی مرکز صحت لنگر سرائے کے بھتہ خور ڈسپنسر مدثر کو فوری طور پر تبدیل کیا جائے اور فی مریض پرچی کے 50روپے وصولی کی بھی مکمل انکوائری کی جائے اور مرکز میں آنے والے مریضوں کو ادویات کی فراہمی بھی یقینی بنائی جائے۔

ادویات فقدان

مزید : ملتان صفحہ آخر