راولپنڈی،کرسچن کالونی کی رہائشی خاتون انصاف کیلئے دربدر ہوگئی

راولپنڈی،کرسچن کالونی کی رہائشی خاتون انصاف کیلئے دربدر ہوگئی

راولپنڈی(سٹی رپورٹر) تھانہ نصیر آباد کی حدود میں واقع کرسچین کالونی کی رہائشی خاتون انصاف کے لئے در بدر ہوگئی‘ تھانہ نصیر آباد کے اے ایس آئی نے مکا کرکے سائلہ کوڈیڑھ لاکھ کا ٹیکہ لگانے کے باوجود ملزمان کو انکوائری میں بے گناہ قرار دیا-خاتون نے اہلکاروں کے خلاف محکمانہ کارروائی کرنے اور انصاف دلانے کے لئے آر پی او راولپنڈی کو درخواست دیدی تفصیلات کے مطابق کرسچین کالونی کوہ نورملز کی رہائشی سیما بی بی زوجہ شہباز حسین نے ریجنل پولیس آفیسر کو دی جانے والی تحریر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے مقامی قبضہ کے اراکین شوکت گجر‘ فوجی نذیر‘ شکیل مسیح‘ گریفن مسیح اور اللہ رکھی نے تھانہ نصیر آباد راولپنڈی کی حدود میں واقع کرسچین کالونی میں میرے پانچ مرلے کے پلاٹ پر موجود تعمیراتی سامان چوری کرلیا اور کچھ نالے میں پھینک دیا جسکی میں تحریری شکایت کی اور میری درخواست پر ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا مگر دوران تفتیش اے ایس آئی محمد سلیم شاد نے مجھے اور میرے خاوند شہباز مسیح کو نفسیاتی طور پر بلیک میل کرکے مبلغ ڈیڑھ لاکھ روپے ہتھیانے کے باوجود ملزمان سے ساز باز کرکے ہمیں دھوکا دیا اور سامان واپس دلوانے کا جھانسہ دے کر ملزم شوکت گجر سے راضی نامہ کروا کے اس غائب کردیا اور حلے بہانوں سے ٹالنا شروع کردیا اے ایس آئی کے خلاف میں نے اینٹی کرپشن میں درخواست دی اس دوران اسکا تبادلہ ہوگیا اور مقدمہ کا نیا تفتیشی افسر اے ایس آئی شفیق کو مقرر کیا گیا اس نے بھی ہم سے بھاری رقم کا مطالبہ شروع کردیا اور دھمکی دی کہ اگر سلیم شاد کے خلاف انٹی کرپشن سے درخواست واپس نہ لی تو میں مقدمہ خارج کردوں گا اور ملزمان کو بے گناہ قرار دے دوں گا سیما بی بی نے الزام عائد کیا کہ اے ایس آئی شفیق نے سلیم شاد کے خلاف درخواست واپس نہ لینے پر ملزمان کو بے گناہ قرار دیدیا ہے اور اب اخراج رپورٹ تیار کرہا ہے انہوں نے آر پی او سے اپیل کی ہے کہ وہ مذکورہ پولیس افسران کے خلاف محکمانہ کارروائی کرکے مجھے انصاف دلوائیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر