غیر قانونی شکار کی روک تھام، خصوصی چھاپہ مارٹیمیں تشکیل دینے کا فیصلہ 

غیر قانونی شکار کی روک تھام، خصوصی چھاپہ مارٹیمیں تشکیل دینے کا فیصلہ 

  

لاہور(سٹی رپورٹر)صوبہ بھر میں جنگلی حیات کے غیر قانونی شکار اور ناجائز تجارت کو روکنے کیلئے علاقائی سطح پر محکمہ کی خصوصی چھاپہ مار ٹیمیں تشکیل دینے اور خفیہ اطلاعات کے حصول کیلئے نظام میں بنیادی تبدیلیاں کرنے کا فیصلہ کرلیاگیا اس امر کا فیصلہ  ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس پنجاب لیفٹیننٹ (ر) سہیل اشرف کی زیر صدارت منعقدہ سینئر افسران کے اجلاس میں کیا گیا۔ جس میں ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف ہیڈ کوارٹرزمحمد نعیم بھٹی، ڈائریکٹرلاہور چڑیاگھر حسن علی سکھیرا،ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف پبلسٹی عامر مسعود، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف لاہور ریجن عبدالشکور منج سمیت صوبہ بھر سے آئے ہوئے ریجنل افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں  رواں سیزن موسم شکار کے مختلف پہلوؤں کا جائزہ لیتے ہوئے فالکن کے شکار اور کاروبار کو سختی سے روکنے کیلئے موجودہ حکمت عملی میں تبدیلی لانے کی تجویز دی گئی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ غیر قانونی شکار کی روک تھام کیلئے تشکیل دئیے گئے خصوصی سکواڈز جس علاقے سے غیر قانونی شکاریوں کو پکڑیں گے وہاں کے متعلقہ افسر کو فرائض میں غفلت کا مرتکب قرار دیتے ہوئے اس کیخلاف کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔ اجلاس میں طے پایا کہ فالکن کے غیر قانونی شکاریوں کی گرفتاری کے وقت ان کے پاس موجود نیٹنگ جال اور دیگر آلات اور شکار کیلئے استعمال ہونے والے پرندے وغیرہ واپس نہ کئے جائیں اور انہیں عدالت کے ذریعے بحق سرکار ضبط کروانے کے بعد پرندوں کو قدرتی ماحول میں آزاد کر دیا جائے۔ مہاجر پرندے تلورکے تحفظ کیلئے فیصلہ کیا گیا کہ تلور کے تمام علاقوں میں تلور کمیشن کے مکمل سروے تک اس کا شکار قطعاً نہیں کھیلا جائیگا اور اس بابت ایڈمنسٹریٹو ڈیپارٹمنٹ کی وساطت سے وزارت خارجہ کو فوری طور پر آگاہ کیا جائے۔ اجلاس میں بٹیر نیٹنگ کے غیر قانونی طریقوں کی موثر روک تھام پر محکمہ کے افسران کی کوششوں کو سراہا گیا اوراس امر پر زور دیا گیا کہ بٹیر نیٹنگ کی ہر سطح پر حوصلہ شکنی اور بٹیرشوٹنگ کیلئے سپورٹس ہنٹرز کی حوصلہ افزائی کی جائیگی۔ اجلاس کے اختتام پر ڈی جی نے صوبہ میں جنگلی حیات کے تحفظ اور فروغ کیلئے محکمہ کے تمام افسران کی کاوشوں کو سراہا اور امید ظاہرکی کہ محکمہ کی نیک نامی کیلئے یہ کوششیں جاری رکھی جائیں گی۔  

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -