کوھاٹ میں واپڈا نجکاری کے خلاف پیسکو یونین کا احتجاجی مظاہرہ

کوھاٹ میں واپڈا نجکاری کے خلاف پیسکو یونین کا احتجاجی مظاہرہ

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) کوھاٹ میں واپڈا نجکاری کے خلاف پیسکو یونین کا احتجاجی مظاہرہ‘ منافع بخش ادارے کی فروخت پر ملازمین کا شدید رد عمل‘ سٹاف کی کمی کو پورا کرنے اور سیفٹی آلات کی فراہمی ممکن بنا کر قیمتی جانوں کے ضیاع کو روکنے کے مطالبات کیے گئے تفصیلات کے مطابق کوھاٹ میں واپڈا نجکاری کے خلاف پیسکو ملازمین نے بھرپور احتجاجی مظاہرہ کیا صوبائی جنرل سیکرٹری یونس شاہ‘ چیئرمین داؤد اور جنرل سیکرٹری یوسف نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ واپڈا کامنافع بخش ادارہ اونے پونے داموں فروخت کرنے کی سازشیں شروع ہو چکی ہیں آئیسکو‘ لیسکو اور کوٹ ادو پاور ہاؤس کی نجکاری کی جا رہی ہے جس سے یہ ادارہ تباہ ہو کر رہ جائے گا انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کی ایماء پر نجکاری کا عمل شروع کیا گیا ہے جو جھوٹے حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کا نتیجہ ہے عمران خان کے قول و فعل میں تضاد ہے انہوں نے واپڈا ملازمین سے جو وعدے کیے تھے وہ سب ہوا ہو گئے جس سے ملک بھر کے تمام سیاسی رہنما خاموش ہیں جس سے واضح ہوتا ہے کہ حکومت کے دن گنے جا چکے ہیں انہوں نے کہا کہ کوھاٹ پیسکو میں 850 پوسٹیں خالی ہیں جس پر لوکل لوگوں کو بھرتی کرنے کی ضرورت ہے ملازمین کے پاس سیفٹی آلات نہیں بجلی یونٹس کے ریٹ بڑھانے کے بجائے کم کرنے چاہئیں انہوں نے کہا کہ کوٹ ادو پاور پلانٹ 747 میگا واٹ بجلی پیدا کر رہا ہے مگر اس کی نجکاری کی جا رہی ہے جو کسی صورت منظور نہیں انہوں نے کہا کہ حکومت ملازمین کو خود سڑکوں پر لا کر حالات خراب کر رہی ہے ڈاکٹروں کو زد و کوب کیا جا رہا ہے ہسپتال بند ہو چکے ہیں کیا یہی ریلیف ہے انہوں نے پیرامیڈیکس کے ساتھ ہمدردی ظاہر کرتے ہوئے ان کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا اور سٹاف کی کمی دور کرنے گاڑیوں کا مسئلہ حل کرنے اور کمپنیوں کو تحلیل کر کے واپڈا کو بحال کرنے کا مطالبہ کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...