دراز نے صارفین کی سہولت کیلئے پک اپ پوائنٹس کا آغاز کر دیا

دراز نے صارفین کی سہولت کیلئے پک اپ پوائنٹس کا آغاز کر دیا

لاہور(پ ر)معروف آن لائن مارکیٹ پلیس ”دراز“ نے اپنے صارفین کی سہولت کیلئے دراز پک اپ پوائنٹس کا ملک بھر میں آغاز کر دیا۔ ملک بھر میں 47دراز مراکز اور کراچی میں 10دوکانز کی تقریب کا انعقاد کیا گیا، جس کے تحت صارفین اپنے گھروں تک پہنچانے کے بجائے اِن مقامات کو اپنے آرڈرز وصول کرنے کے لئے منتخب کر سکتے ہیں۔ فی الحال یہ سروس پری پیڈ آرڈرز پر دستیاب ہے تاہم میگا 11.11سیل ایونٹ سے قبل دراز کا مزید دراز پک اپ پوائنٹس کو چالو کرنے کا منصوبہ ہے۔دراز پاکستان لوکلائزیشن کے سربراہ قاسم شروف کہنا ہے کہ ”پاکستان بھر میں دراز شاپس کے ہمارے پورے نیٹ ورک کے ساتھ ہم اپنے صارفین کیلئے اس نئے فیچر کو پیش کرنے کے لئے بہت ہی پُرجوش ہیں۔ اِس سے صارفین دن کے کسی بھی وقت کام سے پہلے، کام کے بعد یا پھر وہ جب چاہیں اپنا آرڈر وصول کرنے کی رعایت حاصل کر سکتے ہیں۔ علاوہ ازیں اگلے چھ ماہ کے دوران ہم ملک بھر کے سینکڑوں اسٹورز کے ساتھ شراکت داری کا ارادہ بھی رکھتے ہیں تاکہ اپنے صارفین کے لئے اُن کا آرڈر پک اپ کرنے میں مزید آسانی ہو۔“

2018ء میں دراز کے آن لائن پلیٹ فارم نے 19شہروں بشمول کراچی، لاہور، اسلام آباد اور دیگر تمام بڑے شہروں میں دراز مراکز کا آغاز کیا تاکہ صارفین کو دراز کے نمائندوں کی مدد سے آرڈرز لگانے اور پراڈکٹس واپس کرنے میں مدد مل سکے جو دراز کے ملکیتی برک اینڈ مورٹر اداروں پر موجود ہیں جبکہ ایجنٹوں کو یہ یقینی بنانے میں بھی مدد ملتی ہے کہ صارفین کے سوالات اور مسائل کو جلد از جلد حل کیا جائے۔

صارفین کی سہولت کیلئے گزشتہ سال ملک بھر میں 1672دراز دوکانز کا نیٹ ورک شروع کیا گیا تھا۔ اِس اقدام کو کافی پذیرائی ملی ہے چونکہ اس نے چھوٹے خوردہ فروشوں کو اپنے کاروبار کو ڈیجیٹل بنا کر ای کامرس کے حصول میں لانے میں مدد فراہم کی ہے۔ آن لائن پلیٹ فارم نے مقامی کاروبار کو دراز دوکانز کے نام سے آگے بڑھاتے ہوئے اسٹور مالکان کے لئے محصولات کی نئی اسٹریمز کھول دی ہیں۔ انہیں دراز کیٹلاگ تک رسائی فراہم کی گئی ہے اور وہ اپنے کسٹمرز کو آن لائن خریداری کرنے میں مدد فراہم کر سکتے ہیں اور اس کے نتیجے میں ہر آرڈر پر کمیشن حاصل کر سکتے ہیں۔ ملک بھر میں چھوٹے خوردہ اسٹوروں کی انوینٹری میں بنیادی طور پر کئی گنا اضافہ ہوا ہے کیونکہ اُن کے پاس اب لاکھوں مصنوعات تک رسائی ہے جو وہ اپنے کسٹمرز کو بیچ سکتے ہیں۔

مزید : کامرس


loading...