چونیا میں بچوں کے بہیمانہ قتل کے ملزم کا مزید جسمانی ریمانڈ، ملزم مزید 3بچوں کو قتل کر چکا، تفتیشی افسر

چونیا میں بچوں کے بہیمانہ قتل کے ملزم کا مزید جسمانی ریمانڈ، ملزم مزید 3بچوں ...

  

لاہور،چونیاں (نامہ نگاران)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے چونیاں میں بچے سے بداخلاقی کے بعد قتل کرنے کامقدمہ میں ملوث ملزم سہیل شہزاد کو 16اکتوبر تک جسمانی ریمانڈ پرپولیس کے حوالے کردیا،ملزم کا قتل ہونے والے مزید 3 بچوں کے کیس میں بھی جسمانی ریمانڈ حاصل کیا گیاہے۔چونیاں پولیس نے بچے سے بداخلاقی کے بعد قتل کرنے کے الزام میں گرفتار ملزم سہیل شہزاد کو ریمانڈ ختم ہونے پر انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا، عدالت میں تفتیشی افسرنے بتایا کہ دوران تفتیش مزید انکشاف ہوا ہے کہ ملزم نے 12سالہ عمران، 8سالہ سلمان اکرم اور 9 سالہ علی حسن کو بھی بداخلاقی کے بعد قتل کیا ہے،اس ضمن میں بھی مزیدتفتیش بھی کرنی ہے، عدالت سے استدعا ہے ملزم کا مزید جسمانی ریمانڈ دیا جائے،عدالت نے دلائل سننے کے بعد ملزم سہیل شہزاد کو جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔علاوہ ازیں سانحہ چونیاں کے قاتل سہیل شہزاد کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ جتنے بچوں کے ساتھ اس نے زیادتی کے بعد انہیں قتل کیا۔ ہرواردات اس نے بروزہفتہ والے دن کی۔ادھر مقتول بچوں کے والدین نے وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار سے حسب وعدہ مالی معاونت اور ان کے بچوں کی باقیات کی وصولی کا مطالبہ کیا ہے۔ تاکہ ان کے بچوں کی باقیات کو سپردخاک کیا جاسکے۔ بچوں کے والدین کے گھروں میں ابھی تک مقامی اور غیرمقامی لوگوں کی آمدورفت کا تانتا بندھا ہوا ہے۔ ورثاء غربت کی چکی میں پسے ہوئے غم کی تصویر بنے ہوئے ہیں اور مالی معاونت کے منتظر ہیں۔

چونیاں قتل

مزید :

صفحہ آخر -