عدلیہ، وزارت قانون جدید سسٹم سے یکجا ہو کر اصلاحات متعارف کروائیں: فوادچوھری

  عدلیہ، وزارت قانون جدید سسٹم سے یکجا ہو کر اصلاحات متعارف کروائیں: ...

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ ایک ٹاسک فورس قائم کر تے ہوئے وزارت قانون اور عدلیہ کو قریب لا سکتے ہیں جبکہ میری وزارت بھی ایک ساتھ آئے اور ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے قانونی اصلاحات متعارف کروائی جا سکیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ”ٹیکنالوجی فار جسٹس فورم“ کانفرنس سے اپنے خطاب میں کہی۔کانفرنس سے جسٹس منصور علی شاہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹیکنالوجی نے فاصلوں کو سمیٹ دیا ہے اور ہر قسم کے علم کو دروازے پر پہنچا دیاہے، سپریم کورٹ میں ہم نے ایک ریسرچ سینٹر قائم کیا ہے جو کہ ججز کو اچھا فیصلہ لکھنے میں مدد فراہم کرتاہے، کسی بھی ضلع سے جج سپریم کورٹ سے ای میل کے ذریعے رابطہ کرتے ہوئے کسی بھی قانون اور کیس کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتا ہے۔وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے فورم سے خطاب کرتے ہوئے مزیدکہا کہ ہمارا تعاون آپ کے ساتھ ہے، ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے۔ جرمنی کے تعاون سے جسٹس پروجیکٹ پاکستان کی اس کانفرنس کا مقصد گورنمنٹ کے سینئر سٹیک ہولڈرز، سول سوسائٹی کے اراکین، ہیومن رائٹس، وزارت قانون کے سٹیک ہولڈرز، سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، سینئر ججز،وکلاء اور ان کے ساتھ ساتھ مخیر ممالک کے سفیرشامل ہیں،کو یکجا کیا جائے،فواد چوہدری نے اپنی نوعیت کے پہلے فورم ”ٹیکنالوجی فار جسٹس“ کو مکمل سپورٹ کی یقین دہانی کروائی۔ بیرسٹر تیمور ملک نے بھی فورم سے خطاب کیا۔ ان کے علاوہ جسٹس مشیر عالم، وفاقی وزیر حماد اظہر اور جرمنی کے ”برنارڈڈ شلاگیک“بھی تقریب میں شریک تھے۔

ٹیکنالوجی کانفرنس

مزید :

صفحہ آخر -