مولانا پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنیکی سازشوں سے باز رہیں: فردو عاشق

    مولانا پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنیکی سازشوں سے باز رہیں: فردو ...

  

لاہور/اسلام آباد(این این آئی)وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن اصولی کی بجائے چندہ وصولی کی سیاست کر رہے ہیں اورضد، ہٹ دھرمی اور وزیر اعظم سے ذاتی عنا پر مبنی بیانیہ کو لے کر چل رہے ہیں،احتجاج مولانا فضل الرحمان کا حق ہے مگر وقت غلط ہے اس لئے وہ ہوش کے ناخن لیں اور پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنے کی سازشوں کی بجائے وزیر اعظم کے ترقی اور خوشحالی کے بیانیے کے ساتھ کھڑے ہوں،اس وقت اقتدار کی محرومی والے لوگ مولانا فضل الرحمان کے ساتھ کھڑے ہیں،پاکستان سے محبت کرنے والے کبھی بھی ذاتی ایجنڈے کے ساتھ کھڑے نظر نہیں آئیں گے،دنیا پاکستان کو اکنامکس فرنٹ پر اہم کھلاڑی کے طور پر دیکھ رہی ہے،پاکستان کی معیشت کا پہیہ چلنے سے مزدور کا چولہا چلتا ہے جبکہ ٹیکسٹائل انڈسٹری پاکستان کی صنعت کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے،وزیر اعظم نے ٹیکسٹائل انڈسٹری کی بحالی کے لیے اقدامات کئے،جواب میں اپٹما نے بھی حکومت اور وزیر اعظم کو مایوس نہیں کیا،وزیر اعظم نے چین کے صدر اور وزیراعظم سے ملاقاتوں میں باہمی تجارت، سی پیک کی اقتصادی ترقی اور کاروباری روابط بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا،ملاقاتوں میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف بھی بات ہوئی،چائنہ نے پاکستان کے افغانستان میں کردار پر بھی اعتماد کیا اظہار کیا ہے،سی پیک کے تحت لگنے والے انڈسٹریل زون سے ملک میں ترقی و خوشحالی آئے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن(اپٹما)کے دفتر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر اپٹما کے گروپ لیڈر گوہر اعجاز،چیئرمین ٹیکسٹائل انڈسٹری ٹاسک فورس احسن بشیر سمیت دیگر بھی موجو د تھے۔فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ ملک کو گلے سڑے نظام سے نجات دلانے کے لیے اصلاحات اور بڑی سرجری درکار تھی،جب سٹیٹس کو کو چیلنج کرکے اصلاحات لائی جائیں تو مشکلات پیش آتی ہیں،ایسے حالات میں چٹان جیسا حوصلہ لے کر اپنے ارادوں پر کھڑا ہونا پڑتا ہے۔وزیر اعظم پاکستان نے صنعتوں کو درپیش مشکلات کا خاتمہ کرکے معیشت کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کیلئے جو اقدامات کئے آج تاجر برادری بھی انہیں سراہا رہی ہے۔۔انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان کو اندرونی اور بیرونی چیلنجز کا سامنا ہے،ایک سیاسی اور ایک قومی بیانیہ ہے جب دونوں کو یکجا کریں تو پاکستان کا بیانیہ بنتا ہے۔مولانا فضل الرحمن اس وقت بے وقت کی راگنی راگ رہے ہیں،وہ مدارس کے طلباء کو ڈھال کے طور پر استعمال کرنا چاہتے ہیں جبکہ موجودہ حکومت مدارس اصلاحات کے ذریعے مدرسہ کے طالبعلم کو پاکستان کا طاقتور اور قیمتی اثاثہ بنانا چا ہتی۔انہوں نے کہا کہ سوچنے والی بات ہے کہ بھارتی ٹی وی چینل مولانا فضل الرحمان کے بیانیہ کو نشر کر رہے ہیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان نے کسی کی ذات کو فوکس کرکے ٹارگٹ نہیں کیا بلکہ وہ ایک مائنڈ سیٹ جو ہر شعبہ میں موجود ہے جو کرپشن اور عہدوں کا ناجائز استعمال کرتے ہیں کو تبدیل کرنے کیلئے کوششیں کر رہے ہیں،اس لئے وزیر اعظم اداروں کی بحالی کی بات بھی کرتے ہیں۔قبل ازیں ایک بیان میں ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاہے کہ چین کے وزیراعظم لی کی چیانگ اور وزیراعظم عمران خان کا گرمجوشی کا انداز آئرن برادرز کی عظیم دوستی کا مظہر ہے،دونوں رہنماؤں کی ملاقات مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون میں مزید وسعت کا باعث بنے گی۔ایک بیان میں ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ یہ دوستی خطے اور دنیا میں ایک مثال اور امن وترقی کی علامت ہے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان کا عظیم عوامی ہال آمد پر چین کے وزیراعظم کی جانب سے پرتپاک استقبال دونوں سدابہار دوستوں کے لازوال اور گہرے رشتے کا درخشاں باب ہے۔ انہوں نے کہاکہ دونوں رہنماؤں کی ملاقات مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون میں مزید وسعت کا باعث بنے گی۔ انہوں نے کہاکہ چینی وزیراعظم نے  عمران خان کے سی پیک منصوبوں پر تیز رفتاری سے تکمیل کے عزم اور پیشرفت پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہاکہ سی پیک اتھارٹی کا قیام اس امر کا ثبوت ہے کہ حکومت سی پیک منصوبوں پر تیز تر اور موثر عمل درآمد کو یقینی بنانے کیلئے پرعزم ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کا ملاقات میں مقبوضہ جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال اور انسانی بحران پر گفتگو آئینہ دار ہے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان ہر محاذ پر کشمیریوں کے حق کیلئے ڈٹ کر کھڑے ہیں۔ 

فردوس عاشق اعوان

مزید :

صفحہ اول -