ڈاکٹرشکیل آفریدی کی سزاکے خلاف دائراپیل کی سماعت22اکتوبرتک ملتوی

    ڈاکٹرشکیل آفریدی کی سزاکے خلاف دائراپیل کی سماعت22اکتوبرتک ملتوی

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ نے کالعدم تنظیموں سے روابط اورامریکہ کے لئے جاسوسی کے الزام میں گرفتار ڈاکٹرشکیل آفریدی کی سزاکے خلاف دائراپیل کی سماعت22اکتوبرتک ملتوی کردی اور ایڈوکیٹ جنرل کوتیاری کے لئے مہلت کی استدعامنظورکرلی چیف جسٹس وقاراحمدسیٹھ اور جسٹس نعیم انورپرمشتمل دورکنی بنچ نے اپیل کی سماعت کی تو اس موقع پر ایڈوکیٹ جنرل خیبرپختونخواشمائل احمدبٹ حکومت کی جانب سے اوردرخواست گذار کی جانب سے عبداللطیف آفریدی ایڈوکیٹ پیش ہوئے اس موقع پر ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت کو بتایاکہ پشاورہا ئیکورٹ نے حال ہی میں ایک فیصلہ کیاہے جس میں متعدد کیسوں کی نوعیت اوراس کے طریقہ کاروضع کیاگیاہے تاہم اب بھی بعض کیسوں میں قانونی سقم باقی ہے کیونکہ ابھی یہ آناباقی ہے کہ آیاکہ اگرایک فیصلہ سابق قانون کے تحت ہواہے لہذااب ہائی کورٹ اس بات کاتعین کرے گی کہ اپیل کی سماعت سابق قوانین کے تحت ہوگی یانئے قوانین کے مطابق جس کے لئے عدالت کی معاونت کرناہے جس کے لئے مہلت درکارہے انہوں نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ چونکہ ملزم کے وکیل عبداللطیف آفریدی نے پشاورہائی کورٹ میں درخواست دائرکی ہے کہ وہ 19اکتوبرتک سپریم کورٹ میں مصروف ہیں اس بناء کیس کو تیاربھی نہیں کیاگیا جس پرفاضل بنچ نے کیس کی سماعت22اکتوبرتک ملتوی کرتے ہوئے ایڈوکیٹ جنرل کو تیاری کاحکم دیا۔س

مزید : صفحہ اول


loading...