طلاق کی خبر منظر عام پر لانا ضروری نہیں سمجھا، بشریٰ انصاری

  طلاق کی خبر منظر عام پر لانا ضروری نہیں سمجھا، بشریٰ انصاری

  

 لاہور(فلم رپورٹر) سینئراداکارہ بشریٰ انصار ی کا کہنا ہے کہ انہوں نے عوامی سطح پر لوگوں کے سامنے اپنی طلاق کا اس لئے اظہار نہیں کیا کیونکہ اس سے پرستار ڈسٹرب ہوجاتے ہیں،لوگوں نے اداکاروں کے حوالے سے خوشگوار فیملی کا ذہن بنایا ہوتا ہے اس لئے ایسی نجی بات عوام سے شیئر کرنے کی ضرورت نہیں۔ بشریٰ انصاری نے کہا کہ ان کی طلاق کو اب تو بہت سال ہوگئے ہیں۔ ہم نے فیملی لائف اچھے امیج کے ساتھ گزاری  لیکن اس میں جب تھوڑی سی گڑ بڑ ہوتی ہے تو لوگ ڈسٹرب ہوجاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جمال شاہ اور فریال،طاہرہ سید اور نعیم بخاری بہت ہی پیاری جوڑیاں تھیں لیکن جب یہ لوگ الگ ہوئے تو لوگوں کے دل ٹوٹ گئے۔ 

ن کے معاملے میں کسی نے کسی کو برا نہیں کہا لیکن لوگ ڈسٹرب ہوئے ہیں۔ لوگوں نے اپنے ذہن میں ہمارے بارے میں ایک خوشگوار زندگی کا نقشہ بنایا ہوتا ہے لیکن سب کی زندگی میں مسائل ہوتے ہیں، کوئی بینکر ہو یا ڈاکٹر، سب کی زندگی میں ایشوز ہوتے ہیں، ایسی نجی بات عوام سے شیئر کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔یاد رہے 63 سالہ بشریٰ انصاری کی 1978 میں شادی ہوئی تھی، ان کے سابق شوہر اقبال انصاری ٹیلی ویژن پروڈیوسر تھے اور دونوں کے ہاں 2 بیٹیاں بھی پیدا ہوئیں۔

مزید :

کلچر -