فائیو جی ٹیکنالوجی،کورونا ویکسین کیخلاف اپیل مسترد

فائیو جی ٹیکنالوجی،کورونا ویکسین کیخلاف اپیل مسترد

  

     کراچی (سٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے فائیوجی ٹیکنالوجی اور کورونا ویکسین کیخلاف درخواست مسترد کرتے ہوئے درخواست گزار  پر 25 ہزار روپے جرمانہ عائدکردیا۔ سندھ ہائی کورٹ میں بسمہ نورین کی درخواست پر سماعت ہوئی، جو عدالت نے مسترد کردی، درخوا ست گزار نے فائیو جی ٹیکنالوجی کے استعمال اور کورونا ویکسین کیخلاف دائر درخوا ست میں مؤقف اختیار کیا تھا کہ فائیو جی ٹیکنالوجی کا استعما ل انسانی صحت کیلئے نقصان دہ ہے، اس کے علاوہ کورونا ویکسین کو لازمی قرار دینا بھی بنیادی شہری حقوق کیخلاف ہے۔ عدالت نے تحریری حکم نامے میں کہا دنیا فائیو جی ٹیکنالوجی سے فوائد حاصل کر رہی ہے، درخواست گزار نے اپنے دلائل میں فائیو جی ٹیکنالوجی کے نقصان سے متعلق ایک لفظ بھی نہیں بتایا، جس ٹیکنالوجی سے دنیا فائدہ اٹھا رہی وہ ہمارے لیے نقصان دہ کیسے ہوسکتی ہے؟ حکم نامے کے مطابق درخوا ست گزار کا صرف اس بات پر زور تھا یہ ٹیکنالوجی غیر قانونی اور مضر صحت، درخواست کیساتھ منسلک ایک دستاویز ایسی بھی ہے جو پٹیشن کے مؤقف کی نفی ہے۔ عدالتی فیصلے کے مطابق کورونا ویکسین سے متعلق بھی درخواست گزار کے مؤقف سے ایسے لگتا ہے کہ شاید وہ با خبر نہیں ہیں، دنیا گذشتہ دو سالوں سے اس خطرناک مرض سے دوچار ہے، ایسی بیماری کا دنیا کو پہلے کوئی تجربہ نہیں رہا ہے، کورونا ویکسی نیشن سے وائرس کیخلاف قوت مدافعت میں اضافہ ہوگا، ان اقدامات کے سامنے کسی ایک کی خواہش کو رکاوٹ نہیں ہونا چاہیے۔عدالت نے دراخو ست مسترد کرتے ہوئے پٹیشنر پر 25 ہزار روپے جرمانہ بھی عائد کیا، عدالت نے جرمانے کی رقم ہائیکورٹ کے کلینک فنڈ میں جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

اپیل مسترد

مزید :

علاقائی -