نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 کیخلاف درخواستیں اعتراض لگا کر واپس

 نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 کیخلاف درخواستیں اعتراض لگا کر واپس

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے رجسٹرار آفس نے نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 کے خلاف دائردرخواستیں اعتراض لگا کر واپس کردی،رجسٹرار آفس نے درخواست گزار کو آرڈنینس کی کاپی ساتھ لگانے کی ہدایت کی  درخواست گزاروں اشتیاق اے چودھری اورسعید ظفر ایڈووکیٹس نے نیب ترمیمی آرڈیننس  کے خلاف الگ الگ درخواستیں دائرکرتے ہوئے موقف اختیارکیا ہے کہ نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 ء اعلیٰ عدلیہ کے فیصلوں کے خلاف ہے، پارلیمنٹ کی موجودگی میں آرڈیننس جاری نہیں کیا جاسکتا، دائر درخواست میں مزید موقف اپنایا گیا ہے کہ قانون کے مطابق چیئرمین نیب کی مدت میں توسیع نہیں ہوسکتی، نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 غیر قانونی اور غیر آئینی ہے۔قانون سازی کا اختیار پارلیمنٹ کا ہے، کسی ایک فرد کے لیے آرڈنینس جاری نہیں کیا جاسکتا، عدالت سے استدعا ہے پٹیشن کے حتمی فیصلے تک نیب ترمیمی آرڈیننس پر عمل درآمد روکا جائے، نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 کو کالعدم قرار دیا جائے۔

واپس 

مزید :

صفحہ آخر -