کے الیکٹرک کا یواین کے گلوبل کمپیکٹ نیٹ و رک کے ساتھ معاہدہ

کے الیکٹرک کا یواین کے گلوبل کمپیکٹ نیٹ و رک کے ساتھ معاہدہ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)ماحولیاتی استحکام کو عملی کارکردگی اور جدت کیلیے اہم جز سمجھتے ہوئے، کے الیکٹرک (کے ای) نے اقوام متحدہ کے گلوبل کمپیکٹ (یو این جی سی) میں شمولیت کے لیے مفاہمت کی ایک یادداشت (ایم او یو) پر دستخط کیے۔یو این جی سی نیٹ و رک میں 162 ممالک کی 14000کمپنیاں موجود  ہیں جو اپنے کاروباری معاملات کو مزید ماحول دوست بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔کے ای کی ڈسٹری بیوشن نیٹ ورک اکیڈمی میں چیئرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی کی سربراہی میں یو این جی سی کی پاکستانی باڈی  ''گلوبل کمپیکٹ نیٹ ورک پاکستان'' (جی سی این پی) کے صدر مجید عزیز اور کے ای کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) مونس علوی نے ایم او یو پر دستخط کیے۔ کے ای اس عالمی تنظیم کا حصہ بننے والی پہلی پاکستانی پاور یوٹیلیٹی کمپنی ہے۔ یو این جی سی کے نکات کے الیکٹرک کے ماحولیاتی و معاشرتی گورننس (ESG)سے متعلق عزائم سے مطابقت رکھتے ہیں۔کے الیکٹرک مختلف اقدامات کے ذریعے معاشرے پر دیرپاو مثبت اثرات مرتب کرنے میں سرگرم عمل ہے۔کے الیکٹرک پراجیکٹ سربلندی جو یو این سسٹینیبلٹی ڈیویلوپمینٹ کے ہدف 11 ''شہروں کو جامع، محفوظ، لچکدار اور پائیدار بنانے کے '' کے عین مطابق ہے، کے ذریعے محفوظ، قابل اعتماد اور بلاتعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ کمیونٹیوں کی ترقی کے لیے 10 ارب روپے کی سرمایہ کاری کر رہی ہے۔ اورنگی، کورنگی، بن قاسم، ملیر اور دیگر علاقوں میں کمپنی نے عوامی مقامات اورا سکولوں کی مرمت اور تزین و آرایش کو یقینی بنایا، پانی صاف کرنے کے پلانٹ نصب کیے اوررہائشیوں کے لیے مفت طبی امدادی کیمپ بھی قائم کیے۔ اسی کے ساتھ کمپنی نے بجلی کنکشن کو ریگولر بنانے کے لیے ایک لاکھ سے زائد، کم لاگت والے میٹرز بھی نصب کیے ہیں۔ پاور کمپنی نے انفرااسٹرکچر کو مضبوط بنانے کے لیے ایریل بنڈلڈ کیبلز (ABCs) بھی نصب کیے ہیں، جس کے نتیجے میں ان علاقوں میں مسلسل بہتری آئی ہے اور بہت سے علاقوں کو بجلی کی بلا تعطل فراہمی ممکن ہو ئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -