زرعی ترقی کیلئے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال ضروری،فخر امام 

زرعی ترقی کیلئے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال ضروری،فخر امام 

  

ملتان(سپیشل رپورٹر) فاطمہ فرٹیلائزر کمپنی نے منسٹری آف فوڈ سیکیورٹی اسلام آباد، محکمہ زراعت پنجاب اور پیر مہر علی شاہ بارانی زرعی یونیورسٹی راولپنڈی کے اشتراک سے سرسبز ربیع مہم کے آغاز کے سلسلے میں کسان کنونشن کا انعقاد کیا جس کی صدارت وائس چانسلر بارانی زرعی یونیورسٹی راولپنڈی پروفیسر ڈاکٹر قمر الزمان  نے کی۔ پروگرام کے مہمان خصوصی وفاقی (بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

وزیر برائے تحفظ خوراک اور تحقیق  سید فخر امام  اور صوبائی وزیر زراعت پنجاب حسین جہانیاں گردیزی  تھے۔ سیکریٹری زراعت پنجاب، زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد خان، ڈاکٹر انجم علی، ڈی جی زراعت پنجاب اور راولپنڈی اور ایبٹ آباد کے ترقی پسند اور مثالی کاشتکار حضرات نے شرکت کی۔ اس موقع پہ فاطمہ فرٹیلائزر کمپنی کے تکنیکی خدمات کے شعبے کے سربراہ  نصیر اللہ خان نے پنجاب کے بارانی علاقوں میں گندم کی پیداوار میں اضافے کیلئے حکومتی اقدامات کو سراہا اور بارانی زرعی یونیورسٹی کی انتظامیہ کا پروگرام کے انعقاد میں تعاون کیلئے شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کاشتکار حضرات کو سرسبز این پی اور کین گوارا کے متوازن استعمال کے ذریعے روایتی کھادوں کے مقابلے میں  دس فیصد سے بھی زیادہ اضافی پیداوار حاصل کرنے کے بارے میں آگاہی دی اور اس سلسلے میں مٹی کے تجزیے کے مطابق سرسبز کھادوں کے استعمال کے راہنما اصولوں کی افادیت پہ روشنی ڈالی۔ وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے کاشتکار حضرات کو بتایا کہ امسال گندم کی پیداوار میں اضافہ کے قومی منصوبہ کے تحت کاشکاروں کو10 لاکھ منظور شدہ اقسام کے بیج کے تھیلے و دیگر زرعی مداخل سبسڈی پر مہیا کئے جا رہے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ بارانی علاقہ جات میں گندم کی کاشت20 اکتوبر سے شروع ہو رہی ہے۔کاشتکار صرف محکمہ زراعت کی منظور شدہ اقسام کا بیج کاشت کریں تاکہ گندم کی آئندہ فصل نہ صرف بیماریوں سے محفوظ رہے بلکہ اس کی فی ایکڑ پیداوار میں بھی اضافہ ہو سکے۔ ا س موقع پرصوبائی اور وفاقی وزراء نے سیمینار کے کامیاب انعقاد پر فاطمہ فرٹیلائزر کمپنی کو خراجِ تحسین پیش کیا جن کی کاوشوں سے کاشتکار گندم کی جدید پیداواری ٹیکنالوجی سے آگاہی حاصل کر رہے ہیں۔اس موقع پر وفاقی وزیر برائے تحفظ خوراک اور تحقیق سید فخر امام  نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت کیے گئے اقدامات کے بارے میں آگاہی دی اور کاشتکار حضرات سے موسمیاتی تغیرات کے تناظر میں جدید زرعی ٹیکنالوجی اور اصلاحات کو اپنانے پہ زور دیا۔  انہوں نے ملکی زراعت میں جدت اور فی ایکڑ پیداوار بڑھانے کے لئے فاطمہ گروپ کے کردار اور اقدامات کو سراہتے ہوئے زور دیا کہ کسان بتائے گئے جدید طریقہ کاشت سے بھرپور استفادہ حاصل کر کے نہ صرف فی ایکڑ گندم کی پیداوار میں اضافہ کر سکتے ہیں بلکہ ملک میں موجودہ گندم کے بحران پر بھی قابو پانے میں حکومت کی مدد کر سکتے ہیں۔وفاقی وذیر زراعت سید فخر امام نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان تحریک انصاف نے سا بقہ حکو مت کے قرضے اتارے ہیں۔اس سال بجٹ میں جو اضافہ کیا گیا ہے اس سے ریکارڈ توڑ ترقیاتی کام ہوں گے بہت سے منصوبے شروع ہو چکے ہیں جلد عوا م کو خوشخبر ی ملنے وا لی ہے۔عوا م کو جو مہنگائی کا بو جھ اٹھانا پر رہا ہے وہ سابقہ حکمرانواں کے کرپشن کا نتیجہ ہے انشا اللہ آنے وا لے الیکشن میں بھی پاکستان تحریک انصاف بھاری اکثریت سے کامیاب ہو گی عمران خان پاکستان کے لیئے ایک اچھے کھلاڑی بھی ثابت ہو ئے اور ایک اچھے سیاستدان بھی ثابت ہو ئے ہیں۔عمران خان کا عزم ایک خو شحال پاکستان ہے اور اس کے لیئے آپ سب کے ساتھ کی ضرور ت ہے۔بہت جلد ہم مہنگائی پر قا بو پا لیں گے۔زراعت کے شعبے کے لیئے بھی بہت سے فنڈ رکھے گئے ہیں کیو نکہ زراعت کا شعبہ پاکستان کے لیئے ریڑھ کی ہڈی سے کم نہیں بہتر پیداوار سے مہنگائی کو کنڑول کرنے کے بہت سے موا قع حاصل کیئے جا سکتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے مخدوم سیدباقر سلطان گردیزی کی جانب سے دیئے گئے عشا ئیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس مو قع پر صو بائی وذیر زراعت سید حسین جہانیاں گر دیزی نے بھی خطاب کیاعشائیہ تقریب میں مخدوم سید عا بد امام، پیر ناصر شاہ، پیر علی اکبر، پیر سبطین شاہ، زین گر دیزی، فیاض خان بلوچ ملک شو کت تھہیم، رانا وقار، خالد کھو کھر ودیگر معززین نے شرکت کی۔

فخر امام

مزید :

ملتان صفحہ آخر -