دھرنے کے مقاصد حاصل نہ ہونے پرقادری اور عمران مایوسی کا شکار ہوچکے،فضل حق

دھرنے کے مقاصد حاصل نہ ہونے پرقادری اور عمران مایوسی کا شکار ہوچکے،فضل حق

لاہور( نمائندہ خصوصی) جمعیت مشائخ پاکستان کے قائد پیر فضل حق نے افسوس کا اظہار کیا ہے کہ اسلام آباد میں دھرنا دیئے بیٹھے اور لاشوں پر سیاست کرنے والے مذاکرات کواپنی ضدر اور ہٹ دھرمی کی وجہ سے کامیاب نہیں ہونے دے رہے ، جبکہ قوم سیلاب میں ڈوبی ہوئی ہے۔مشائخ میڈیا سیل کی طرف سے جاری بیان میں پیر فضل حق نے کہا کہ دھرنے کے مقاصد حاصل نہ ہونے پر طاہرالقادری اور عمران خان کو جو مایوسی ہوئی ہے ۔ اس کا اندازہ نہیں کیا جاسکتا۔ اب وہ منتیں کررہے ہیں کہ دھرنا ختم کریں۔ مگر ضد بھی نہیں چھوڑ رہے۔ کیونکہ بیرون ملک بیٹھے فنانسرز کی طرف سے ابھی اشارہ نہیں آیا۔انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کے اندر جمہوری قوتوں کے اتحاد نے پارلیمانی نظام کے دشمنوں کے منہ بند کردیے ہیں۔اب ان کے پاس الزامات کے سوا کچھ باقی نہیں رہا۔ ان کا کہنا تھا کہ لاکھوں افراد کو احتجاج پر لانے کے دعوے کرنے والوں کو سینکڑوں پر گذاراکرنا پڑا ہے۔ جس کے باعث انہیں مایوسی ہوئی۔ اور ان کے آقا بھی ناراض ہوئے ۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے عوام دھرنا دینے والوں کے ملک دشمن ایجنڈے سے آگاہ ہوچکے ہیں۔ اس لئے ان کی طرف متوجہ نہیں ہوئے

۔ پیر فضل حق نے عمران خان اور طاہرالقادری کو مشورہ دیا ہے کہ وہ حکومتی ٹیم سے مذاکرات کو کامیاب بنا کر اپنی عزت بچالیں ۔ اور لوگوں کے سامنے سرخرو ہوجائیں۔ ورنہ وہ ان مطالبات سے بھی جائیں گے جو اس وقت حکومت ماننے کے لئے تیار ہے ۔ اگر حکومت نے صاف انکار کردیا تو اپنے کارکنوں کو منہ دکھانے کے قابل بھی نہیں رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پوری قوم کو اسلام آباد پہنچنے اور رہنماوںکو کم تعداد پر کوسنے والی قیادت اب منت سماجت پر آگئی ہے اور چھوٹی چھوٹی جماعتوں کو کارکن لانے کے لئے ترلے کررہے ہیں ، مگر انہیں مایوسی کے سوا کچھ نہیں ملا۔ ان کا کہنا تھا کہ عوام دھرنا دینے والی دونوں جماعتوں کے ڈرامے کو سمجھ چکے ہیں۔ عمران خان اور طاہرالقادری کے ہاتھ سوائے ذلت و رسوائی کے کچھ نہیں آئے گا۔ جنہوں نے انہیں اسلا م آباد بھیجا تھا وہ بھی اب ان کے ساتھ نہیں رہے۔میاں نواز شریف کی حکومت اپنی مدت اقتدار پوری کرے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4